شہروز کاشف کے ٹو سر کرنے والے سب سے کم عمر پاکستانی

شہروز کاشف نے آج صبح 8 بج کر 10 منٹ پر کےٹو کی چوٹی سر کی۔

پاکستانی کوہ پیما شہروز کاشف نے کےٹو کی چوٹی سر کرلی ہے۔ شہروز کاشف یہ اعزاز حاصل کرنے والے کم عمر ترین کوہ پیما ہیں۔

شہروز کاشف نے آج صبح 8 بج کر 10 منٹ پر کےٹو کی چوٹی سر کی۔ دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو کو سر کرنے والے 19 سالہ شہروز کاشف نے یہ اعزاز اپنے نام کرکے عالمی ریکارڈ قائم کرلیا ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر شہروز کاشف کی مہم جوئی کے حوالے سے لائیو اپڈیٹس بھی شیئر کی گئیں۔

یہ بھی پڑھیے

ماؤنٹ ایورسٹ سر کر کے شہروز کاشف کی پاکستان واپسی

شہروز کاشف دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والے پاکستان کے سب سے کم عمر کوہِ پیما بھی ہیں۔ ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے کا کارنامہ انجام دینے کے بعد جون میں جب ان کی وطن واپسی ہوئی تھی تو انہوں نے نیوز 360 سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ مستقبل میں مزید چوٹیاں سر کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ شہروز کاشف 17 سال کی عمر میں پاکستان کی چوتھی بلند ترین چوٹی براڈ پیک سر کرنے والے کم عمر ترین کوہ پیما بھی ہیں۔

یاد رہے پاکستان کے معروف کوہ پیما محمد علی سدپارہ رواں برس 5 فروری کو 2 غیر ملکی کوہ پیماؤں جان سنوری اور ہوان پابلو موہر کے ہمراہ کے ٹو سر کرنے کی مہم کے دوران لاپتہ ہوگئے تھے۔ گزشتہ روز محمد علی سدپارہ اور جان سنوری کی لاشیں کے ٹو کے بوٹل نیک کے قریب سے ملی ہیں۔

کے ٹو
facebook.com/masadpara

واضح رہے کہ کےٹو کے ڈیتھ زون میں 8200-8400 میٹر کے درمیان ایک راستہ ہے جو بوتل کی گردن کی طرح دکھتا ہے جس کی وجہ سے اسے بوٹل نیک کہا جاتا ہے۔ یہ وہ جگہ ہے جہاں سے کوہ پیماؤں کو گزرنا ہی پڑتا ہے۔ یہ کےٹو کا سب سے مشکل ترین حصہ ہے جس کو سر کرنے کے بعد ہی کامیابی کسی کوہ پیما کا مقدر بنتی ہے۔

Facebook Comments Box