پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کم مگر میڈیا خاموش

اگر  پیٹرول  کی  قیمت  بڑھتی ہے  تو  تمام  ٹی  وی  چینلز  واویلا  مچا  دیتے  ہیں۔

پیٹرول اور ڈیزل ڈیڑھ روپے سستا کردیا گیا ہے۔ حکومت  کی  جانب  سے قیمتوں  میں  کمی  کی  اس  اہم  ترین  خبر  کو  ہمارے  مین  اسٹریم  میڈیا  پر کسی  خاطر میں  نہیں  لایا  جارہا  ہے۔

پاکستان میں مہنگائی بڑھنا  عام  بات  جبکہ چیزوں  کی  قیمتیں کم  ہونا  انوکھی  بات سمجھی  جاتی  ہے۔ اس حساب  سے  اگر  دیکھا  جائے  تو ہمارے ملکی  میڈیا  کے  لیے  سب  سے  بڑی  خبر کسی اہم  چیز  کے  دام  کم  ہونا  ہونی چاہیئے۔ لیکن،  حیران  کن  طور  پر  ہمارے  میڈیا میں الٹی  گنگا  بہہ  رہی  ہے۔

آج  کی  اہم  ترین  خبر یہ  ہے  کہ  حکومت  نے  پیٹرول  اور  ڈیزل  کی  قیمتیں  کم  کردی  ہیں۔ وزارت خزانہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق حکومت نے پیٹرول 1 روپے 50 پیسے فی لیٹر سستا کردیا۔  جس  کے  بعد پیٹرول کی نئی قیمت 118 روپے 30 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔ ہائی اسپیڈ ڈیزل بھی 1 روپے 50 پیسے فی لیٹر سستا ہوکر115 روپے 3 پیسے فی لیٹر ہوگیا ہے۔ مٹی کے تیل  کی  قیمت  بھی 1روپے 50 پیسے فی لیٹر کم کردی  گئی۔  جس  کے  بعد  اب یہ 86 روپے 80 پیسے فی لیٹر میں فروخت ہوگا۔ لائٹ ڈیزل کی قیمت میں ایک روپے فی لیٹر کمی گئی ہے اور اسکی فی لیٹر قیمت  84 روپے 77 پیسے ہوگئی ہے۔

یہ  بھی  پڑھیے

پی ٹی وی پر شہباز شریف کی لائیو تقریر کا کریڈٹ فواد چوہدری کو

پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں نے  عوام  کو  زیادہ  نہیں  تو  کچھ  حد  تک  تو  ریلیف  فراہم  کیا  ہے  تاہم  ٹی  وی  چینلز  پر  اس  خبر  کو خاص  اہمیت  نہیں  دی  گئی۔ اس  خوشخبری  پر  نہ  تو عوام  کا  ردعمل  جاننے  کی  کوشش  کی  گئی  نہ  ہی  اس  حوالے  سے  کوئی  خصوصی  رپورٹ بنائی  گئی۔

اس  کے  برعکس  اگر  پیٹرول  کی  قیمت  بڑھتی ہے  تو  تمام  ٹی  وی  چینلز  واویلا  مچا  دیتے  ہیں۔ سرخیاں  لگ  رہی  ہوتی  ہیں  کہ  حکومت  نے  عوام  پر مہنگائی  کا  بم  گرادیا۔  عوام  سے  مہنگائی  پر  رائے  طلب  کی  جاتی  ہے۔ صرف  یہی  نہیں  خبرناموں  میں  باقاعدہ  سیگمنٹس چلائے  جاتے  ہیں۔

یہاں  سوال  تو  یہ  بنتا  ہے  کہ  جب  حکومت  پیٹرول  اور  ڈیزل  کی  قیمت  کم  کرتی  ہے  تو  ہمارے  میڈیا  ادارے  خبر  کو  خبر  کی  طرح  پیش  کیوں  نہیں  کرتے؟  کیوں  عوام  سے  ریلیف  ملنے  پر  ان  کی  رائے  طلب  کرکے  ٹی  وی  پر  نشر  نہیں  کی  جاتی؟  حالانکہ  ایسا  بہت  کم  ہوتا  ہے  کہ  کسی  حکومت  کی  جانب  سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں  کمی  کی  جائے۔  اور  اگر  ایسا  ہو  رہا  ہے  تو  صحافتی  اقدار کے  لحاظ  سے  یہی  سب  سے  بڑی اور اہم  خبر  ہے۔

Facebook Comments Box