سوزوکی نے بھی ایک ماہ میں تیسری بار دام بڑھادیے، آلٹو 28 لاکھ روپے کی ہوگئی

کمپنی نے اس سے قبل 24 جنوری اور 8 فروری کو بھی گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا، نئی قیمتوں کا اطلاق 20 فروری سے ہوگیا

پاکستان میں کار ساز اداروں نے سال اور مہینوں  کے بعد اب ہفتہ وار بنیاد پر گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافے کو معمول بنالیا۔ٹویوٹا انڈس موٹر اور ہنڈاٹلس کے بعد پاک سوزوکی موٹرکمپنی نے بھی مہینے میں تیسری مرتبہ گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ کردیا۔

کمپنی نے اس سے قبل 24 جنوری اور 8 فروری کو بھی گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا۔قیمتوں میں تازہ ترین اضافے کے بعد سوزوکی آلٹو کی قیمت 28لاکھ روپے تک جاپہنچی ہے۔ نئی قیمتوں کا اطلاق 20 فروری سے ہوگیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ہنڈا اٹلس نے ایک ماہ میں تیسری بار گاڑیاں ساڑھے 5 لاکھ روپے تک مہنگی کردیں

انڈس موٹر کمپنی نے ایک ماہ میں تیسری بار گاڑیاں مہنگی کردیں

پاک سوزوکی موٹر کمپنی میں تعلقات عامہ کے سربراہ شفیق احمد شیخ نے  بجلی، گیس کی قیمتوں،  جی ایس ٹی، مختلف یوٹیلیٹیز اور اوور ہیڈ اخراجات، کرنسی میں اتار چڑھاؤ، اقتصادی غیر یقینی صورتحال، مقامی اور بین الاقوامی خام مال اورپرزہ جات کی قیمت میں  بے تحاشہ اضافے کو گاڑیوں کی قیمت بڑھنے کی وجہ قرار دیا ہے۔

 انہوں نے کہاکہ مذکورہ بالا عوامل کے پیش نظر پیداواری لاگت میں بے تحاشہ اضافے کے باوجود  کمپنی نے انتہائی کم بوجھ صارفین پر منتقل کیا ہے۔

کمپنی نے ایک ماہ میں تیسری بارگاڑیوں کی قیمت میں اضافہ ایسے وقت میں کیا ہے جب حالیہ عرصے میں کمپنی  کی ماہانہ فروخت میں ریکارڈتنزلی ریکارڈ کی گئی ہے۔ کمپنی نے پاکستان آٹو موٹیو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پاما) کو فراہم کردہ اعداد و شمار میں بتایا کہ  ہے کہ ماہانہ بنیاد پر اس کی فروخت میں 74فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

کمپنی کے جاری کردہ نئے نرخ نامے کے بعد  سوزوکی آلٹو وی ایکس کی قیمت ایک لاکھ 10 ہزار روپے اضافے کے بعد20لاکھ 34ہزار روپے سے بڑھ کر  21لاکھ 44ہزار روپے ہوگئی ہے جبکہ سوزوکی وی ایکس آر ایک لاکھ 28ہزار روپے اضافے کے بعد 23لاکھ 59ہزار روپے سے بڑھ کر 24لاکھ87ہزار روپے کی ہوگئی ہے جبکہ سوزوکی وی ایکس آر اے جی ایس ایک لاکھ 44ہزار روپے اضافے کے بعد 26لاکھ 51ہزار سے بڑھ کر 27لاکھ 95ہزار روپے کی ہوگئی ہے۔

سوزوکی ویگن آر  وی ایکس آر ایک لاکھ 85 ہزار روپے اضافےکےبعد  28 لاکھ 77ہزار روپے سے بڑھ کر 30لاکھ 62لاکھ روپے کی ہوگئی۔سوزوکی ویگن آر وی ایکس ایل کی قیمت ایک لاکھ 96 ہزار روپے اضافے کے بعد 30 لاکھ 52ہزار روپے سے بڑھ کر 32لاکھ 48ہزار روپے ہوگئی ہے جبکہ ویگن آر اے جی ایس 2 لاکھ15ہزار روپے اضافے کےبعد 33لاکھ 48ہزا رروپے سے بڑھ کر 35لاکھ63ہزار روپے کی ہوگئی ہے۔

سوزوکی کلٹس وی ایکس آر 2 لاکھ14ہزار روپے اضافے کے بعد 33لاکھ26ہزار روپے سے بڑھ کر 35لاکھ 40ہزار روپے کی ہوگئی ہے جبکہ کلٹس وی ایکس ایل 2 لاکھ 35ہزار روپے اضافے کے بعد 38 لاکھ 89ہزار روپے کی ہوگئی ہے جبکہ کلٹس اے جی ایس 2لاکھ 51 ہزار روپےاضافے کے بعد 39لاکھ 6ہزار روپے سے بڑھ کر 41لاکھ 57ہزار روپے کی ہوگئی ہے۔

سوزوکی سوئفٹ  کی 3 اقسام کی قیمتوں میں بھی 2لاکھ 45 ہزار روپے سے 2 لاکھ 63 ہزار روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔سوئفٹ جی ایل مینول ٹرانسمیشن 2 لاکھ 45 ہزار روپے اضافے کے بعد 40لاکھ 52 ہزار روپے جبکہ سوئفٹ جی ایل سی وی ٹی اور جی ایل ایکس سی وی ٹی کی قیمتیں 2لاکھ 63 ہزار روپے اضافے کے بعد بالترتیب 43 لاکھ 35 ہزار اور 47لاکھ 25ہزار روپے ہوگئی ہے۔

سوزوکی راوی کی قیمت 16 لاکھ 69 ہزار روپے سے بڑھ 17لاکھ68ہزار روپے جبکہ سوزوکی راوی بغیر ڈیک کی قیمت 15لاکھ 94ہزار روپے سے بڑھ کر 16لاکھ 93ہزار روپے ہوگئی ہے جبکہ سوزوکی بولان کی قیمت 17 لاکھ 54ہزار روپے سے بڑھ کر 18لاکھ 44ہزار روپے اور بولان کارگو کی قیمت 17لاکھ 41 ہزار روپے سے بڑھ کر 18لاکھ 52 ہزار روپے ہوگئی ہے۔

متعلقہ تحاریر