غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر 54 ماہ کی بلند ترین سطح پر

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر 18 ارب 20 کروڑ ڈالرز کی سطح پر پہنچ گئے ہیں۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان ( ایس بی پی ) کا کہا ہے کہ گزشتہ ہفتے بین الاقوامی مارکیٹ میں یورو بانڈز کے اجراء کے خلاف 1 ارب ڈالرز موصول ہو گئے، جس کی وجہ سے غیرملکی زرمبادلہ کے ذخائر گزشتہ 54 ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے ہیں۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق زرمبادلہ کے ذخائر 18 ارب 20 کروڑ ڈالرز کی سطح پر پہنچ گئے ہیں جو پچھلے ساڑے چار سالوں میں سبسے زیادہ ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں نے ترسیلات زر کے ریکارڈ توڑ دیے

ایک ارب ڈالر کی آمد سے اسٹیٹ بینک کے زر مبادلہ کے ذخائر اٹھارہ اعشاریہ دو ارب ڈالر تک پہنچ گئے ہیں جو مالی سال دوہزار پندرہ سولہ میں آٹھ اعشاریہ ایک ارب ڈالر تھے جبکہ ملک کے مجموعی زرمبادلہ کے ذخائر24.4ارب ڈالر تک پہنچ گئے ہیں جو مالی سال دوہزار سولہ میں تئیس اعشاریہ صفر نو آٹھ ارب ڈالر تھے۔

پاکستان نے 5 سال کے لیے 5 اعشاریہ 8 فیصد پر 30 کروڑ ڈالرز، 10 سال کی مدت کے لیے 7 اعشاریہ 12 فیصد پر 40 کروڑ ڈالرز کے بانڈز جاری کیے تھے، جبکہ 30 سال کی مدت کے لیے 8 اعشاریہ 4 فیصد پر 30 کروڑ ڈالرز کے یورو بانڈز بونڈز جاری کیے گئے تھے۔

مرکزی بینک نے یورو بانڈز کے اجراء سے حاصل ہونے والی آمدنی کی تصدیق پیر کے روز کی تھی۔

واضح رہے کہ ہفتے کے روز ایک تقریب کے دوران وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے تجارت عبدالرزاق داؤد نے معاشی اشاریوں میں استحکام کا دعویٰ کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں معیشت درست سمت پر گامزن ہے اور ملکی صنعت مثالی ترقی کررہی ہے۔

مشیر تجارت کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے گزشتہ سالوں میں شرح نمو کے تمام اہداف حاصل کیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال پاکستان کی برآمدات میں 31 ارب ڈالرز کا ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔ جس میں بڑا ٹیکسٹائل کے شعبے کا ہے۔

Facebook Comments Box