پاکستان میں منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے خصوصی ریگولیشن کی گئی ہیں، اشفاق تولہ

انسٹی ٹیویٹ آف چارٹرڈ اکاؤٹنٹس آف پاکستان آئی کیپ کے نائب صدر اشفاق تولہ نے نیوز 360 سے خصوصی گفتگو میں کہا کہ پاکستان کے چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس اور آڈیٹرز فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے معیار سے ہم آہنگ ہیں اور انسداد منی لانڈرنگ اور مشکوک سرمائے کی رپورٹنگ میں عالمی معیار کی خدمات فراہم کرتے ہیں۔

نیوز 360 سے خصوصی گفتگو میں اشفاق تولہ نے کہا کہ پاکستان کے لیے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس اور اس کے ضلعی گروپ، ایشیا پیسفک گروپ کے 83 شرائط پر عمل درآمد کے ایک مکمل روڈ میپ کا دباؤ ہے۔ پاکستان اس سلسلے میں تقریباً 75 اہداف پر مکمل عمل درآمد کرکے خاصی حد تک سرخرو بھی ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیکیوریٹی اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے بھی مشکوک سرمائے یا منی لانڈرنگ سے پیسے بنانے والوں کے تعاقب کے لیے ملک بھر کے چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس اور آڈیٹرز کی کئی مشکلیں حل کردی ہیں۔ پاکستان میں ایسی تمام کمپنیز جو کہ سیکیورٹی اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان میں رجسٹرڈ ہیں، اپنے سالانہ گوشوارے میں اپنے تمام ڈائریکٹرز اور ان کے اثاثہ جات کی تفصیلات دینے کی پابند ہوں گی۔

یہ بھی پڑھیے

بجلی گھروں کو گیس کی فراہمی جاری، صنعتکار پریشان

 اشفاق تولہ نے نیوز 360 کو بتایا کہ پاکستان میں منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے خصوصی ریگولیشن کی گئی ہیں اور اس سلسلے میں ریگولیشن ونگ بنا ہے اور پاکستان مکمل ایپلٹ بورڈ بنا ہوا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے لیے خوشی کی بات یہ ہے کہ جنوبی ایشیا کے ملکوں میں چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس کی ایک تنظیم بنی ہوئی ہے اور اس کی اینٹی منی لانڈرنگ کمیٹی بنائی گئی ہے جس کا چیئرمین پاکستان ہے اور پاکستان کے لیے اس کی سربراہی ان کے ذمے ہے۔

Facebook Comments Box