اٹلی میں دنیا کا قدیم ترین بینک برائے فروخت

بنکا ایم پی ایس کو 2009 میں پہلی بار بیل آؤٹ پیکج دیا گیا تھا تب سے بینک ریاست پر بوجھ بنا ہوا ہے۔

بنکا مونٹی دی پاسچے ڈی سینا (ایم پی ایس) اٹلی کا دوسرا بڑا بینک  ہے جو 1472 میں قائم کیا گیا تھا، بینک کی 2020 میں 1 ہزار 418 شاخیں ملک کے اندر تھیں جبکہ بیرون ممالک میں 11 شاخیں تھیں۔

دنیا کا سب سے قدیم بینک بنکا مونٹی دی پاسچے ڈی سینا اب اٹلی میں بند ہو رہا ہے کیونکہ اسے کارپوریٹ سیکٹر میں بہت بڑے نقصان کا سامنا ہے ، اس بات کی تصدیق اس معاہدے نے بھی کردی ہے جو بینک انتظامیہ نے یونی کریڈٹ کے ساتھ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

پاکستان میں الیکٹرانکس اشیاء کی پیداوار میں ریکارڈ اضافہ

بنکا ایم پی ایس کو 2009 میں پہلی بار بیل آؤٹ پیکج دیا گیا تھا تب سے اب تک بینک اٹلی کی ریاست پر بوجھ بنا ہوا ہے۔

قرض دینے والی دو ریاستوں نے بینک کو سہارا دینے کے لیے 8 ارب یورو سے زیادہ کی سرمایہ کاری تھی مگر یہ جدوجہد بھی رائیگاں چلی گئی ہے، اور بینک اپنے پاؤں پر کھڑے ہونے میں ناکام رہا۔

اٹلی کی حکومت نے قرض کے بوجھ تلے دبے بینک کو یورپی یونین (ای یو) کی آخری وارننگ کے بعد بیچنے کا فیصلہ کیاہے۔

رواں سال جولائی میں میلان کی کارپوریٹ انویسٹمنٹ بینکنگ کمپنی یونی کریڈٹ نے اٹلی کے ساتھ بانکا ایم پی ایس کے کچھ “منتخب حصے” خریدنے کے لیے بات چیت کا آغاز کیا تھا۔

اگرچہ یونی کریڈٹ نے اطالوی ٹریژری پاسچی بانڈز خریدے پر زور دیا ہے، تاہم بات بات چیت ابھی ابتدائی مرحلے میں ہے لیکن ابھی کوئی نتیجہ سامنے نہیں آیا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ بینک کی بندش یا یونی کریڈٹ کو فروخت سے ہر دو صورتوں میں 6 ہزار ملازمین اپنی ملازمت سے ہاتھ دھو سکتے ہیں، اور مونٹی دی پاسچے کا شہر کے ساتھ صدیوں پرانا رشتہ بھی ختم ہو جائےگا۔

Facebook Comments Box