پاکستانی  نئی  پرواز  فلائی  جناح کے  نام  سے  ناخوش

شہری نئی  پرواز  کے  نام  فلائی جناح  سے  کچھ  خوش  دکھائی  نہیں  دیتے  ہیں۔

اماراتی ایئرلائن ایئرعربیہ نے پاکستانی کاروباری ادارے لیکسن گروپ کے ساتھ مل کر فلائی جناح نامی  پرواز لانچ  کرنے  کا  اعلان   کیا  ہے۔  سوشل  میڈیا صارفین  ایئرلائن  کے  نام  سے  خوش  دکھائی  نہیں  دے  رہے۔

ایئرعربیہ کے  آفشل  ٹوئٹر  ہینڈل  سے  بتایا  گیا  ہے  کہ وہ  لیکسن گروپ کے اشتراک  سے  نئی پرواز لانچ کرنے جارہے  ہیں  جس کا نام  فلائی جناح  ہے۔ کہا  جارہا  ہے کہ  اس  ائیر لائن  کے  ذریعے  اندرون اور بیرون ملک سستی ترین پروازیں چلائی جائیں گی۔  کراچی  سے  شروع  کی  جانے  والی  یہ  پرواز  پہلے  ملک  کے  مختلف  شہروں  میں  جائے  گی  جس  کے  بعد  بین الاقوامی سطح پربھی روٹ نیٹ ورک بڑھایا  جائے  گا۔

وزیر  اعظم  عمران  خان  نے  ایئرعربیہ کا  خیرمقدم  کرتے  ہوئے  ٹوئٹ  کیا  کہ وہ  فلائی جناح  کے  قیام کے لیے مقامی سرمایہ کاروں سے اشتراک کی کامیابی کے  لیے دعاگو  ہیں۔

یہ  بھی  پڑھیے

کیا سرین ایئر واقعی بدترین ایئرلائن ہے؟

دوسری  جانب  شہری اس  نئی  پرواز  کے  نام  فلائی جناح  سے  کچھ  خوش  دکھائی  نہیں  دیتے  ہیں۔ سوشل میڈیا صارفین  کی بڑی تعداد  نے بانی پاکستان محمد علی جناح کے نام کو کاروباری استعمال میں لانے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ صارفین نے حکومت سے ایئرلائن کا نام تبدیل کرنے کا بھی مطالبہ کردیا۔

ایک  صارف عمر  قریشی نے  لکھا  کہ  اگر کوئی ایئر لائن  کے  نام  کے خلاف درخواست  دائر کرئے گا تو دیکھانا یہ  ہوگا  کہ عدالتیں کس طرح جواب دیں  گی۔

صحافی  حسن  زیدی  کو  بھی  فلائی  جناح  کا  نام  سمجھ  نہیں  آیا،  سماجی  رابطوں  کی  ویب  سائٹ  ٹوئٹر  پر  لکھا  کہ  کیا  اب  بہت  سارے  لوگ  جناح  پر  بیٹھ  کر  جائیں  گے؟

Facebook Comments Box