چھ کمپنیوں کے گردشی قرضوں کا حجم 1557 ارب روپے تک پہنچ گیا

معاشی ماہرین کا کہنا ہے سرکلر ڈیٹ کا مسئلہ حل کرنے کے لیے حکومت تھرڈ پارٹی آڈٹ کرائے۔

ملک میں 6 کمپنیوں کے گردشی قرضہ کا حجم 1557 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے، جبکہ سرکلر ڈیٹ بڑھنے کی وجہ سے کئی کمپنیوں کو مالی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق سوئی سدرن گیس کمپنی نے مختلف اداروں سے گردشی قرضے کی مد میں 357 ارب روپے وصول کرنے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

سونے کی فی تولہ قیمت میں 400 روپے کمی

آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی (او جی ڈی سی) کی وصولیاں 348 ارب روپے تک پہنچ گئی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سوئی سدرن گیس کمپنی کی وصولیاں 259 ارب روپے تک پینڈنگ ہیں جبکہ پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ کی وصولیوں کا گراف بڑھتے ہوئے 278 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے۔

دوسری جانب کے الیکٹرک کے گردشی قرضے 94 ارب  روپے تک پہنچ گئے ہیں۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ حکومت کو مختلف کمپنیوں کے گردشی قرضوں کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے تھرڈ پارٹی آڈٹ کروانی چاہیے تاکہ اصل حقائق سامنے آسکیں، اور مسئلے کا مستقل سدباب بھی کیا جاسکے۔

Facebook Comments Box