میرا پاکستان میرا گھر اسکیم کی کامیابی کا سفر جاری

اسٹیٹ بینک کے مطابق 31 اگست تک 59 ارب روپے کے رہائشی قرضوں کی منظوری دے دی گئی ہے۔

پاکستان میں روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ کے بعد میرا پاکستان میرا گھر اسکیم کی بھی کامیابی کا سفر تیزی سے جاری ہے۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق اسکیم کے تحت 31 اگست تک 154 ارب روپے کے قرضوں کی درخواستیں موصول ہوچکی ہیں۔

حکومت نے غریب عوام کو اپنا گھر بنانے اور انہیں دیگر سہولتیں فراہم کرنے کے لیے مختلف اسکیمں متعارف کروائی ہیں۔ اس سلسلے میں حکومت کی میرا پاکستان میرا گھر اسکیم تیزی سے کامیابی کی جانب رواں دواں ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں لکھا ہے کہ اسکیم کے تحت انہیں 31 اگست تک 154 ارب روپے کے قرضوں کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔ مرکزی بینک کے مطابق مختلف بینکس نے 31 اگست تک 59 ارب روپے کے رہائشی قرضوں کی منظوری دے دی ہے۔

اسٹیٹ بینک نے اپنے بیان میں لکھا کہ میرا پاکستان میرا گھر اسکیم کے تحت گزشتہ ماہ 38 ارب روپے کے رہائشی قرضے جاری کیے  گئے جو کہ مجموعی طور پر جاری کردہ قرض کا 49 فیصد بنتا ہے۔ منظور شدہ درخواستوں پر رقم کے اجرا کا عمل بھی تیز کردیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ کے بہتر نتائج سامنے آگئے

اسٹیٹ بینک کے مطابق پہلے لوگوں کو اپنا گھر بنانے کے لیے قرضوں کی حاصلات مشکل تھی جسے اب آسان بنا دیا گیا ہے۔ میرا پاکستان میرا گھر اسکیم کے ذریعے بیرون ملک مقیم پاکستانی اب اپنے یا اپنے خاندان کے لیے با آسانی گھر خرید سکتے ہیں۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق ملک بھر میں 8 ہزار سے زائد بینکس کی مخصوص برانچوں کے ذریعے میرا پاکستان میرا گھر کی درخواستیں وصول کی جارہی ہیں۔ اسکیم کے تحت اہلیت کے معیار پر پورا اترنے والے افراد کو پہلی بار اپنا گھر بنانے کے لیے ہاؤسنگ قرض فراہم کیا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ حکومت نے ستمبر 2020 میں روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ (آر ڈی اے) اسکیم بھی متعارف کروائی تھی۔ اگست 2021 کے آخر تک اس اسکیم کے تحت ملکی ذخائر 2 ارب ڈالر سے بھی تجاوز کرگئے تھے۔

Facebook Comments Box