بجٹ کے ایک ماہ بعد ہی 30 ارب کے نئے ٹیکسز کیلیے منی بجٹ کی تیاری

حکومت نے آئی ایم ایف کے ایگزیکٹو  بورڈ اجلاس سے پہلے منی بجٹ لانے کا فیصلہ کرلیا، ایف بی آر کو فنانس بل کی تیاری کیلیے گرین سگنل مل گیا، حاصل شدہ رقم سے پی ایس او کے واجبات ادا کیے جائیں گے

وفاقی حکومت نے بجٹ کے ایک ماہ بعد ہی آئی ایم ایف کے ایگزیکٹو  بورڈ اجلاس سے پہلے  منی بجٹ لانے کا فیصلہ کرلیا۔

حکومت 30 ارب روپے کے نئے ٹیکسز کے لیے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو فنانس بل کی تیاری کا گرین سگنل دے دیا ۔

یہ بھی پڑھیے

وفاقی حکومت کا بڑا یوٹرن، تاجروں سے فکسڈ ٹیکس کی وصولی ختم

توانائی کا شعبہ ملک کا سب سے بڑا خسارے کا شعبہ بن گیا

 حکومت آئی ایم ایف کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس سے پہلے  30 ارب کا نیا ٹیکس لگانا چاہتی ہے۔ اسی لیے منی بجٹ لانے کی تیاری ہے۔  اس بات کا امکان ہے کہ  اس سلسلے  رواں ماہ آرڈیننس لایا جاسکتا ہے  ۔

پاکستان اسٹیٹ آئل کے واجبات کلیئر کرنے کے لیے خصوصی اقدامات کیے جارہے ہیں ۔ پی ایس او کو 30 ارب روپے کی رقم ادائیگی کیلئے ایف بی آر کو نئے ٹیکس اقدامات کی ہدایت کردی گئی ہے۔

واضح رہے حکومت اہم دوست خلیجی ملک کو پی ایس او کے شیئرز دینے سے پہلے اسے معاشی طور پر تگڑا کرنا چاہتی ہے۔

Facebook Comments Box