میوزک بینڈ کا قائداعظم کی یادگار کے سامنے بیہودہ ڈانس

سوشل میڈیا صارفین نے بانی پاکستان کی بے حرمتی کرنے پر میوزک بینڈ کی ساری ٹیم کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

قائداعظم محمد علی جناح کی تصویر اور ان کے تین سنہری اصولوں اتحاد ، ایمان اور تنظیم کے سامنے میوزک بینڈ کے لڑکا اور لڑکی نے بیہودہ ڈانس کرکے بانی پاکستان کے اقوال کی بے حرمتی کرنے کے ساتھ ساتھ صوفیانہ شاعری کا بھی مذاق اڑایا ہے۔

سماجی رابطوں کی سب سے بڑی ویب سائٹ فیس پر شیئر کی گئی میوزک بینڈ کی تصاویر اسلام آباد میں قائداعظم کی یادگار کے سامنے لی گئی ہیں۔ اس شوٹ کے بعد سوشل میڈیا پر بہت زیادہ غم اور غصہ پایا جارہا جو بجا طور پر درست ہے۔

یہ بھی پڑھیے

طالبان کے نظام انصاف کو فواد چوہدری کا چیلنج

لیکن ستم ظریفی دیکھیں میوزک بینڈ کا کہنا ہے کہ “ہم نے یہ شوٹ اس لیے کیا تھا کہ ہم پاکستان کو عزت دیں اور خاص طور پر یہ تین اخلاقی اسباق جن پر ہمیں فخر ہے”۔

میوزک بینڈ کے بیان کے سوشل میڈیا صارفین نے انہیں غیرت دلاتے ہوئے کہا ہے کہ آپ لوگوں کو شرم کرنی چاہیے، اپنی غلطی کو مانتے ہوئے معافی مانگنی چاہیے۔ اگر آپ واقعی سوچتے ہیں کہ اس قسم کے فوٹو شوٹ کا قائد کے فلسفے سے کوئی تعلق ہے تو پھر آپ کو دوبارہ سنجیدہ ہو کر اسکولنگ کی ضرورت ہے۔

ایک سوشل میڈیا نے میوزک بینڈ کے کرداروں پر تنقید کرتے ہوئے لکھا ہے کہ “یہ ناقابل رحم اور بیہودہ لوگ ہیں ، میں ان کی اس گھٹیا حرکت کو اپنی وال پر شیئر بھی کرسکتا ، یہ آزاد خیال پاگل لوگ پاکستان کا مثبت تاثر خراب کررہے ہیں۔”

ولید احمد نامی سوشل میڈیا صارف نے لکھا ہے کہ “یہ کیا بےغیرتی ہو رہی ہے۔”

فیس بک پر شیئر کی گئی تصاویر میں بہت واضح دکھائی دے رہا ہے کہ میوزک بینڈ کے کردار لڑکے اور لڑکی نے بیہودہ لباس زیب تن کررکھا ہے۔ ایک تصویر میں لڑکی زبان نکالے کھڑی ہیں جبکہ ان کے بالکل پیچھے ڈسپلن (تنظیم) لکھا ہوا ہے۔

ایک تصویر میں دونوں افراد اکڑوں انداز میں کھڑے ہیں اور ان کے پیچھے فیتھ (ایمان) لکھا ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے غصے کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ غیراخلاقی فوٹو شوٹ کرنے اور کرانے والی ساری ٹیم کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

Facebook Comments Box