میشا شفیع کو علی ظفر اور اقرار الحسن پر تنقید مہنگی پڑگئی

گلوکارہ علی ظفر کو پروگرام میں بلانے پر آگ بگولہ ہوگئیں۔

یوم  پاکستان  پر اقبال پارک میں خاتون ٹک ٹاکر کی تذلیل کے بعد اینکر پرسن  اقرار الحسن نے جب عائشہ کی ہمت بڑھائی تو گلوکارہ میشا شفیع نے ان  پر دوغلے پن  کا الزام عائد  کردیا  تاہم  سوشل  میڈیا  صارفین  نے  انہیں  آڑے  ہاتھوں  لے  لیا۔

پاکستانی  گلوکارہ  میشا  شفیع  گلوکار  علی ظفر  پر  ہراسگی  کا  الزام  لگا  کر  خود  تو  عدالت  نہیں  آتیں  لیکن  جو شخص  علی  ظفر  کو  اپنے  پروگرام  میں  مدعو  کرتا  ہے  اسے  تنقید  کا نشانہ  بنانا  شروع  کردیتی  ہیں۔ جشن  آزادی  کے  موقعے  پر معروف  اینکر  پرسن  اقرار  الحسن نے  علی  ظفر  کو خصوصی  نشریات میں  بطور  مہمان  مدعو کیا۔

یہ  بھی  پڑھیے

عائزہ خان ایک کروڑ فالوورز رکھنے والی پہلی اداکارہ؟

مینار  پاکستان  پر  خاتون  سے بدتمیزی  کی  ویڈیو وائرل  ہو ئی  تو  اقرار  الحسن متاثرہ  خاتون  عائشہ  کی  ہمت  بڑھانے  ان  کے  گھر پہنچ  گئے۔  اس حوالے سے ٹوئٹ میں اینکر پرسن  نے جہاں عائشہ کو ذمہ  داران کے خلاف مقدمہ  درج  کرانے  پر داد  دی  وہیں ہراساں  کرنے  والے  تمام مردوں  کو  آڑے  ہاتھوں  لیا۔

میشا  شفیع  نے سماجی  رابطوں  کی  ویب  سائٹ ٹوئٹر پر اقرار  الحسن پر  تنقید  کی  اور بند الفاظ  میں ان  پر دوغلے پن  کا الزام عائد  کردیا۔

سوشل  میڈیا  صارفین  بھی  علی  ظفر  کی  حمایت  میں  نکل  آئے  اور  میشا  شفیع  کو  آڑے  ہاتھوں  لے  لیا۔ ایک  صارف  نے  لکھا  کہ  علی  ظفر  پر  اب  تک  الزام  ثابت  نہیں  ہوا  ہے،  اور  آپ  نے  گلوکار  پر  ہراسگی  کا  جھوٹا  الزام لگایا  ہے۔

ایک  اور  صارف  نے  کہا  کہ  محترمہ  آپ  علی  ظفر  کے  خلاف  ثبوت  کب  پیش  کریں  گی؟

واضح  رہے  کہ  میشا  شفیع  نے  2018   میں  علی  ظفر  پر  ہراسگی  کا  الزام  لگایا  تھا  لیکن  وہ  عدالت  میں  کبھی  پیش  نہیں  ہوئیں۔ بیرون  ملک  مقیم  گلوکارہ  سوشل  میڈیا  پر  علی  ظفر  کے  خلاف  مہم  چلاتی  رہتی  ہیں۔

Facebook Comments Box