شام ادریس کی سوشل میڈیا پر شہرت حاصل کرنے کی مذموم کوشش

یوٹیوبر کا کہنا ہے نسلی تعصب رکھنے والے ڈیمیٹریس اوک ول کے ملازمین نے اس بنا پر آرڈر لینے سے انکار کردیا کیونکہ میری اہلیہ نے حجاب کررکھا تھا۔

یوٹیوبر شام ادریس اور ان کی اہلیہ کوئین فروگی کی ایک ویڈیو نے سوشل میڈیا پر تہلکہ مچا دیا ہے، ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ کینیڈین کیفے ڈیمیٹریس کے عملے نے ان کی خدمت کرنے سے انکار کر دیا تھا جبکہ حقائق بتاتے ہیں کہ میاں بیوی نے شہرت حاصل کرنے کا ایک مذموم انداز اپنایا تھا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر شام ادریس نے ایک ویڈیو شیئر کی جس میں ان کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کی تفصیلات بیان کی گئیں۔

یہ بھی پڑھیے

عفت عمر کے قابل ضمانت اور علی گل پیر کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری

شام ادریس نے ویڈیو کے ٹائٹل میں لکھا ہے کہ “نسلی تعصب رکھنے والوں نے ہمیں کہا کہ ہم آپ کی خدمت نہیں کرسکتے۔ انہوں نے لکھا ہے کہ میری اہلیہ اور خاندان کی تمام خواتین حجاب کرتی ہیں۔”

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Sham Idrees (@shamidrees)

مزید برآں اُن کی اہلیہ کوئین فروگی نے اپنے انسٹاگرام پیج پر اپنے تلخ تجربے کو شیئر کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ” ڈیمیٹریس اوک ول نے اُن کا آرڈر نہیں لیا اور ان سے کہا کہ وہ مسلمان ہیں اور حجاب پہنے ہوئی ہیں۔

اس کے جواب میں کینیڈین کیفے ڈیمیٹریس کی انتظامیہ نے اپنا موقف بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ “جو بھی واقعہ پیش آیا ملازمین اور زائرین کے درمیان غلط فہمی کی بنا پر پیش آیا تھا۔”

اگرچہ بہت سے سوشل میڈیا صارفین نے شام ادریس اور ان کی اہلیہ کے حق میں آواز بلند کی ہے ، تاہم انٹرنیٹ کے صارفین کی ایک بڑی تعداد نے شام ادریس کی کارگزاری کو کیفے کو بدنام کرنے سے تعبیر کیا ہے۔

بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ “یہ یوٹیوبرز کی جانب سے ناظرین میں تشہیر حاصل کرنے کے لیے یہ سب ڈرامہ رچایا گیا تھا۔”

اس سلسلے میں معروف فیس بک گروپ “سیول سسٹرز پاکستان” کی بانی کنول احمد نے یوٹیوبرز کے خلاف اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے کنول احمد نے لکھا ہے کہ “ادریس نے اپنی بیوی کے حجاب کے ساتھ امتیازی سلوک کا منظر نامہ دکھا کر کینیڈا میں مسلمانوں کے ساتھ زیادتی کی ہے”۔

Facebook Comments Box