ڈرامہ سیریل پری زاد نے مقبولیت کے سارے ریکارڈز توڑ دئیے

یوٹیوب پر 18 قسطیں اپ لوڈ ہوچکی ہیں، ہر قسط کو 5 لاکھ سے زائد افراد نے دیکھا ہے، شائقین احمد علی اکبر کی اداکاری کے دیوانے ہوگئے۔

پاکستان کے نئے ڈرامہ سیریل پری زاد کی رواں ہفتے منگل کے روز نشر ہونے والی قسط کو یوٹیوب پر 74 لاکھ سے زائد افراد دیکھ چکے ہیں۔

ہم ٹی وی کے ڈرامے پری زاد کی نئی قسط میں دکھایا گیا ہے کہ پری زاد جیل سے رہا ہوگیا ہے اور اپنے سابق مالک بہروز کریم کا کاروبار سنبھالنے کے بعد اس سے پورے شہر کے رئیس ملاقات کرنے کے خواہش مند ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

احمد علی اکبر نے ‘پری زاد’ کے کردار کو ناقابل فراموش بنا دیا

شہزادی ڈیانا کا کردار نبھاتے ہوئے مضطرب تھی، کرسٹین اسٹیورٹ

پری زاد نے اپنا نام بھی تبدیل کرکے پی زیڈ میر رکھ لیا ہے، اس کے اعزاز میں ایک بہترین دعوت منعقد کی جاتی ہے جس میں شہر کے تمام دولت مند شرکت کرتے ہیں۔

اسی تقریب میں پری زاد کی ملاقات ایک خاتون سے ہوتی ہے جس سے یونیورسٹی کے زمانے میں اس کا معاشقہ رہا ہوتا ہے۔

یوں تو پاکستانی ڈرامہ انڈسٹری کے بےشمار ڈرامے ہیں جنہیں عوام میں بےانتہا پذیرائی حاصل ہوئی جیسا کہ ہمسفر، شہرِ ذات، زندگی گلزار ہے، میں عبدالقادر ہوں لیکن حیران کن امر ہے کہ ‘پری زاد؛ کے حصے میں جو پذیرائی آرہی ہے وہ شاید پچھلے چند سالوں میں کسی ڈرامے کو نہ ملی ہو۔

ڈراما سیریل پری زاد جس قدر مقبول ہوگیا ہے یہ مقبولیت پہلے صرف 80 اور 90 کی دہائی میں نشر ہونے والے ڈراموں کو ملتی تھی۔

یوٹیوب پر پری زاد کی 18 قسطیں اپ لوڈ ہوچکی ہیں اور ہر قسط کو 5 لاکھ سے زیادہ افراد دیکھ چکے ہیں۔

احمد علی اکبر نے ‘پری زاد’ کا کردار ادا کیا ہے جو کہ ایک نہایت غریب گھرانے سے تعلق رکھنے والا شخص ہے اور اپنی ذہانت کی وجہ سے ہر ملازمت میں اپنی جگہ بنانے میں کامیاب ہوجاتا ہے۔

احمد علی اکبر نے پری زاد میں اداکاری کر کے اپنی کیریر بیسٹ پرفارمنس دے دی ہے۔

ڈرامہ سیریل مقبولیت کے نئے ریکارڈز بنا رہا ہے۔ ڈرامے کی کہانی بھی عمومی طور پر نشر ہونے والے ڈراموں سے بہت منفرد ہے۔

Facebook Comments Box