سب سے بڑے ویکسینیشن سینٹر میں ویکسین کی قلت

کراچی کے ایکسپو سینٹر میں قائم ماس ویکسینیشن سینٹر میں ایسٹرا زینیکا ویکسین ختم ہوچکی ہے۔

کراچی کے ایکسپو سینٹر میں قائم پاکستان کے سب سے بڑے ویکسینیشن سینٹر میں ویکسین کی قلت پیدا ہوگئی ہے۔

حکومت پاکستان ملک سے کرونا کی وباء کے خاتمے کے لیے سرتوڑ کوششیں کر رہی ہے۔ وباء کے خلاف حکومتی اقدامات کی تعریف کی جارہی تھی کہ ملک کے سب سے بڑے ویکسینیشن سینٹر میں ہی ویکسین کی قلت پیدا ہوگئی۔

یہ بھی پڑھیے

ایکسپو ویکسینیشن سینٹر کے انتظامی امور سے عوام مطمئن

صحافی واجد رضا اصفہانی نے کراچی کے ایکسپو سینٹر میں قائم ماس ویکسینیشن سینٹر کی قلعی کھول دی۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر جاری پیغام میں صحافی نے اپنی روداد من و عن بیان کردی۔ انہوں نے لکھا کہ وہ ماس ویکسینیشن سینٹر میں ویکسین لگوانے کے لیے گئے تو طویل قطار میں کھڑے رہنا پڑا۔ کئی گھنٹوں کے بعد رات 10 بجے وہ ہال کے اندر داخل ہوئے جہاں رجسٹریشن کی مختصر قطار لگی ہوئی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ جب ان کی ویکسینیشن کے عمل کا نمبر آیا تو ایسٹرازینیکا ویکسین ختم ہوچکی تھی۔ سائنو ویک اور سائنو فارم ویکسین صرف اُن افراد کو لگائی جارہی تھیں جو پہلی خوراک لے چکے ہیں۔

واجد رضا اصفہانی نے کراچی کے شہریوں کو مشورہ دیا کہ 40 برس سے کم عمر افراد پہلی خوراک لگوانے کے لیے ماس ویکسینیشن سینٹر کا رخ نہ کریں۔ ایسٹرا زینیکا ویکسین سے متعلق خوف پھیلایا جاچکا ہے جس کی وجہ سے میں نے بھی فی الحال ویکسین نہ لگوانے کا فیصلہ کیا ہے۔

متعلقہ تحاریر