وفاق کا "فائیو جی ٹیکنالوجی” اور "پہل” کے نام سے سروسز شروع کرنے کا فیصلہ

وفاقی وزیر برائے آئی ٹی سید امین الحق کے مطابق منصوبے کے تکمیل پر 31 ارب روپے کی لاگت آئے گی۔

وفاقی حکومت آئندہ برس دسمبر میں فائیو جی ٹیکنالوجی کا آغاز کررہی ہے جبکہ "پہل” کے نام سے ملک بھر میں 911 ایمرجنسی سروسز کا بھی اجرا کیا جارہا ہے۔ اسمارٹ فون فار آل منصوبے میں بھی جلد اہم پیش رفت سامنے آئے گی۔

پاکستان کے عوام کے لیے خوش خبری ہے کہ ملک بھر میں دو اہم منصوبوں پر پیش رفت جاری ہے جس سے ان کی زندگیوں میں مزید آسانی پیدا ہوگی۔

یہ بھی پڑھیے

ایپل کا بڑا اعلان، ہر ملازم کو 1000 ڈالر بونس ملے گا

 وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) سید امین الحق کا ایک تقریب سے خطاب میں کہنا تھا کہ دسمبر 2022 تک ملک میں فائیو جی ٹیکنالوجی کا آغاز کر دیا جائے گا جس کے لیے تیاریاں جاری ہیں۔ کنکٹیویٹی اور ہائی اسپیڈ انٹرنیٹ کی فراہمی کے 31 ارب روپے کے منصوبوں کی تکمیل جلد ہوگی۔

وزارت آئی ٹی کے تحت ہزارہ یونیورسٹی مانسہرہ میں سافٹ ویئر ٹیکنالوجی پارک بھی قائم کردیا گیا ہے۔

سید امین الحق کا کہنا تھا کہ پکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ یونیورسٹی کے اشتراک سے 12 ہزار مربع فٹ جگہ پر ٹیکنالوجی پارک قائم کیا گیا ہے۔ جبکہ وزارت آئی ٹی کے تحت ہزارہ یونیورسٹی میں بھی جلد ہی "نینشنل انکوبیشن سینٹر” قائم کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کا شاندار مستقبل "ڈیجیٹل ٹیکنالوجی” سے خود کو ہم آہنگ کرنے سے مشروط ہے۔

22  کروڑ عوام کے ہاتھوں میں فون

فاقی وزیر آئی ٹی کا کہنا تھاکہ اسمارٹ فون فار آل منصوبے کا جلد آغاز کریں گے، حکومت22 کروڑ عوام کے ہاتھوں میں اسمارٹ فون دیکھنا چاہتی ہے۔ اسٹارٹ اپس اور فری لانسرز پاکستان کا نام روشن کررہے ہیں۔

دسمبر 2022 تک فائیو جی ٹیکنالوجی کے آغاز کے لیے تیاریاں جاری ہیں، مانسہرہ میں کنکٹیویٹی مسائل کے حل کے لیے پی ٹی اے، موبائل کمپنیوں اور یو ایس ایف کو ہدایات جاری کردی ہیں۔

"پہل” کے نام سے 911 ایمرجنسی سروس

 امین الحق کا کہنا ہے کہ پورے ملک میں "پہل” کے نام سے 911 ایمرجنسی سروس شروع کرنے جارہےہیں، ایمبولینس، پولیس مدد، فائربریگیڈ، گیس، بجلی، اور ریسکیو سروسز نائن ون ون کال سے ممکن ہو گی۔ ملک کے معاشی استحکام اور نوجوانوں کی کامیابیوں کے لیے انفارمیشن ٹیکنالوجی ہی مستقبل ہے۔

موبائل ایپس، ویب پورٹلز، ای کامرس، ای گورنمنٹ،ای ایجوکیشن اور آن لائن نوکریاں ڈیجیٹل پاکستان ویڑن کا حصہ ہیں۔ان کا کہنا تھاکہ ڈیجیٹل پیمنٹس، آئی ٹی پارکس کے قیام سمیت دیگر منصوبوں پر ملک میں تیزی سے کام ہورہا ہے، اربوں روپے لاگت سے فائبر آپٹکس اور نیٹ ورکنگ میں توسیع کے منصوبے "یونیورسل سروس فنڈ” کے تحت زیر تکمیل ہیں۔

انٹرنیٹ صارفین کی بڑھتی ہوئی تعداد

پی ٹی اے  کے مطابق پاکستان میں ہر ماہ انٹرنیٹ براڈ بینڈ صارفین کی تعداد میں 1.4 ملین اضافہ ہو رہا ہے۔ اس وقت ملک میں 8 کروڑ 80 لاکھ صارفین مجموعی طور پر اس سہولت سے استفادہ کر رہے ہیں۔

 وزارت آئی ٹی کے مطابق یو ایس ایف کے تحت ہر ماہ براڈ بینڈ اور نیٹ ورک توسیع کا ایک نیا منصوبہ عوام کے لیے پیش کرنے کا اعلان کیا ہے۔

حالیہ دو برسوں میں پاکستان میں موبائل فون استعمال کرنے والوں کی تعداد 81 فیصد سے زائد ہوچکی ہے جبکہ براڈ بینڈ سروس استعمال کرنے والوں کی تعداد بھی 42 فیصد سے تجاوز کرچکی ہے۔

Facebook Comments Box