سید خورشید شاہ نے اسٹیبلشمنٹ سے تعاون کی اپیل کردی

رہنما پیپلز پارٹی نے کہا ہمیں اللہ پر یقین ہے کہ اب فون کالز نہیں جائیں گے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر ارر رکن قومی اسمبلی رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ فری اینڈ فیئر الیکشن کے لیے ہمارے ساتھ ہاتھ ملا لے۔

آج نیوز چینل کی سینئر اینکر پرسن عاصمہ شیزاری کو انٹرویو دیتے ہوئے سید خورشید شاہ کا کہنا تھا ہمارا چیئرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ایم این اے عالیہ حمزہ نے عاصمہ جہانگیر فاؤنڈیشن کی فنڈنگ پر سوال اٹھا دیا

سارے شہر کی مشینری اور عملہ لے کر جاؤ اور نسلہ ٹاور گراؤ،چیف جسٹس کا حکم

انہوں نے کہا کہ ہمیں پہلے قومی اسمبلی کے لیے سوچنا ہے کہ کیا کرنا ہے، ہمیں اللہ  کی ذات پر بھی یقین ہے اور اداروں پر بھی یقین ہے کہ کم از کم اب ٹیلی فون کالز نہیں جائیں گے، کیونکہ ٹیلی فون کالز کوئی ایک مرتبہ نہیں گئی ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ ہم سب سے ڈپٹی اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد لائیں جب وہ گھرچلے جائیں گے تو پتا چل جائے گا کہ فون کالز نہیں ہوئیں۔

پی پی کے سینئر رہنما کا کہنا تھا اس کے بعد تین سے چار ماہ میں نئے سیٹ اپ کے ساتھ نگران وزیراعظم کے زیر اہتمام نئے الیکشن کرائے جائیں۔ ہر پارٹی اپنا منشور عوام کے سامنے لے کر جائے اور جو بھی آئے نئے مینڈیٹ کے ساتھ آئے۔

آج نیوز چینل کی اینکر پرسن عاصمہ شیزاری کے سوال کے جواب سید خورشید شاہ کہنا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ ہمارے ساتھ تعاون کرے، بیک فٹ پر نہ جائے ، اسٹیبلشمنٹ ایک اچھی حکومت بنانے میں مدد کرے۔

Facebook Comments Box