وفاقی حکومت کا نجی بجلی گھروں کو 134 ارب روپے کی ادائیگیوں کا فیصلہ

آئی پی پیز کو رقم کی ادائیگی 3 دسمبر تک کیئے جانے کا امکان ہے۔

وزیر اعظم عمران خان اور وفاقی کابینہ نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے توانائی کے شعبے میں 134 ارب روپے کی بڑی ادائیگیاں کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

توانائی کے شعبے میں ادائیگیوں اور زیرگردش قرضوں کے صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے وزیراعظم عمران خان نے ایک بڑا شاٹ کھیل دیا ہے۔ جو توانائی کے شعبے میں گیم چینجر ہو سکتا ہے۔ وفاقی کابینہ نے آئی پی پیز کو 134 ارب 78 کروڑ 30 لاکھ روپے جاری کرنے کی منظوری دے دی۔

یہ بھی پڑھیے

ٹیلی نار پاکستان میں مزید کمپنیز کیساتھ انضمام کیلیے کوشاں

بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کی پاکستانی کمپنی میں سرمایہ کاری

وفاقی کابینہ نے رقم دوسری قسط کی مد میں جاری کرنے کی منظوری دی گئی ہے، آئی پی پیز کو رقم کی ادائیگی 3 دسمبر تک کئے جانے کا امکان ہے۔

نیوز 360 کو ملی والی تفصیلات کے مطابق دوسری قسط کی ادائیگی کے تحت حبکو کو 34 ارب 80 کروڑ، کیپکو کو 59 ارب 40 کروڑ روپے کی ادائیگی کی جائے گی۔

روش کو 8 ارب 50 کروڑ، فوجی پاور پلانٹ کو 2 ارب 60 کروڑ روپے کی ادائیگی کی جائے گی۔ دسمبر کے پہلے ہفتے کی ادائیگیوں میں پاک پاور جین کو 9 ارب 80 کروڑ روپے کی ادائیگی ہو گی۔ لال پیر کو 9 ارب 30 کروڑ ، کے ای ایل کو 3 ارب روپے کی ادائیگی کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق  صبا پاور کو ایک ارب روپے، ایف ایف سی کو 2 ارب 10 کروڑ روپے کی ادائیگی ہوگی۔

وفاقی حکومت اس سے پہلے بھی آئی پی پیز کو پہلی قسط کی مد میں 90 ارب روپے کی ادائیگی کرچکی۔ نجی بجلی گھروں کو کی جانے والی مزید ادائیگیاں اس شعبے میں مزید بہتری آئی گی اور بجلی کی پیداواری شرح نمو میں مزید بہتری آئے گی۔

Facebook Comments Box