رانا شمیم توہین عدالت کیس، 20 جنوری کو فرد جرم عائد ہوگا، حکم نامہ جاری

رپورٹر، ایڈیٹر اور چیف ایڈیٹر کا موقف اہم ہے، موقف ماننا زیر التوا کیسز سے متعلق کچھ بھی چھاپنے کا لائسنس دینے جیسا ہوگا، عدالت۔

رانا شمیم توہین عدالت کیس کی گزشتہ سماعت کا تحریری حکم نامہ جاری، اسلام آباد ہائیکورٹ نے تمام فریقین کو فرد جرم کے لئے 20 جنوری کو 10 بجے پیش ہونے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے حکم نامے میں کہا کہ توہین عدالت کے ملزمان کو کافی وقت دیا گیا، افسوس ہے کہ ملزمان کا موقف یہی رہا کہ کچھ غلط نہیں کیا۔

حکم نامے کے مطابق کیس میں رپورٹر، ایڈیٹر اور چیف ایڈیٹر کا موقف اہم ہے، موقف ماننا زیر التوا کیسز سے متعلق کچھ بھی چھاپنے کا لائسنس دینے جیسا ہوگا۔

واضح رہے کہ سابق چیف جسٹس گلگت بلتستان رانا شمیم نے برطانیہ میں ایک ایفی ڈیوڈ پر بیان دیا تھا کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے ان کے سامنے کسی سے فون پر بات کرتے ہوئے نواز شریف اور مریم نواز کے خلاف عدالتی فیصلے میں اثر انداز ہونے کی ہدایت کی تھی۔

رانا شمیم کے ایفی ڈیوڈ سے متعلق خبر جنگ گروپ کے انگریزی اور اردو اخبارات میں انصار عباسی نے رپورٹ کی اور اسے شامل اشاعت بھی کیا گیا۔

اب مذکورہ ایفی ڈیوڈ کی حقیقت اور رانا شمیم کے بیان سمیت اخباری خبر پر بھی عدالتی تحقیقات جاری ہیں کہ ایسا کوئی معاملہ ہوا بھی تھا یا نہیں۔

Facebook Comments Box