آسٹریلوی صحافی پاکستانیوں کی مہمان نوازی کے معترف

ہمیں اعزازی ڈگریاں نہیں ملی ہیں، لیکن ہمارے معزز میزبانوں کے خلوص تحفے ضرورملے ہیں

24 سال بعد پاکستان کے دورے پر آنےوالی آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کے ساتھ   آنیوالے آسٹریلوی صحافیوں نے پاکستانی میڈیا اور پریس کی جانب سے سووینئر کے اعزاز دینے پر شاندار مہمان نوازی کےلئے شکریہ ادا کیا ہے۔

پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان تاریخی سیریز کے افتتاحی ٹیسٹ کے دوران آسٹریلوی صحافیوں نے جذبہ خیر سگالی کے طور پر پاکستانی میڈیا اور پریس کی جانب سے سووینئر وصول کیے ، آسٹریلوی صحافیوں کو روایتی چادریں اور چترالی ٹوپی تحفے میں دیں۔

یہ بھی پڑھیے

آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کے دو لیجنڈز ایک ہی دن چل بسے

دہائیوں بعد آسٹریلوی ٹیم کی آمد، پی سی بی نے میچ کے ٹکٹ سستے کردیئے

دی آسٹریلین سے تعلق رکھنے والے پیٹر لیلر نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ  ٹوئٹر پردیگر آسٹریلین  صحافیوں کےساتھ ایک تصویر شیئر کی ، تصویر کے ساتھ انھوں نے لکھا کہ ہمیں پاکستانی کرکٹ میں ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگریاں نہیں ملی ہیں، لیکن ہمارے معزز میزبانوں کی جانب سے پرخلوص تحفے ضرورملے ہیں۔

دوسری جانب آسٹریلیاکی اسپورٹس جرنلسٹ میلنڈا فیرل نے بھی مائیکروبلاگنگ کی ویب سائٹ ٹوئٹر پراپنے پاکستانی مداحوں سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ  مجھے لگتا ہے کہ پاکستان  میں ہر شخص مجھ سے دل دل پاکستان کا گانا سننے کی خواہش کرتا ہے اور ہر مرتبہ میں اس کو صحیح طریقے سے نہیں سنا پاتی اور یہ سب پاکستانی صحافی زینب عباس کی غلطی ہے۔

دریں اثنا،  انھوں نے "خوبصورت تحائف اور شاندار مہمان نوازی” کے لیے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ "ہم پاکستانی پریس کی طرف سے ہمارے ساتھ دکھائی جانے والی مہربانی اور دوستی کی واقعی تعریف کرتے ہیں۔

متعلقہ تحاریر