مظفر آباد میں زخمی حالت  میں ملنے والا تیندوا مر گیا

اسلام آباد وائلڈ لائف کے مطابق نایاب نسل کے تیندوے کا آزاد کشمیر میں کثرت سے شکار کیا جارہا یے۔

آزاد جموں کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد کے قریب زخمی پایا جانے والا نایاب چیتا (تیندوا) دوران علاج ہلاک ہو گیا۔

محکمہ وائلڈ لائف کے کی ابتدائی رپورٹ میں تیندوے کو شکار کیے جانے کا انکشاف ہوا یے۔ فیمیل (مادہ) تیندوے کو اے جے کے وائلڈ لائف نے اسلام آباد منتقل کردیا تھا۔

تیندوے کا اسلام آباد میں مکمل ایکسرے اور طبی معائنہ کیا گیا۔  تیندوے کے جسم میں 6ایل جی رائفل کے کارتوس پائے گئے۔ زخمی تیندوے کی کمر ٹوٹ گئی تھی نیچھے والا دھڑ مفلوج ہوچکا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

وفاقی وزیر داخلہ کی کالعدم ٹی ٹی پی کو مشروط مذاکرات کی پیشکش

کراچی، طوفانی ہواؤں سے حادثات میں دو افراد جاں بحق

رپورٹ کے مطابق مادہ تیندوا گولیوں کا نشانہ بننے کے بعد دریا کے قریب پہچا تھا، اسلام آباد وائلڈ لائف کے مطابق نایاب نسل کے تیندوے کا آزاد کشمیر میں کثرت سے شکار کیا جارہا یے۔

زخمی چیتے کی وڈیو کے 22 جنوری سے سوشل میڈیا پر چرچے تھے۔ اب اس کی فیمیل اور کارتوس سے زخمی ہونے کی خبر نے لوگوں کی مزید توجہ حاصل کرلی ہے۔

اس سے پہلے یہ خیال کیا جا رہا تھا کہ اسے کسی گاڑی سے حادثہ پیش آیا ہے یا یہ گہرائی میں گرنے کی وجہ سے زخمی ہوا ہے اور مقامی افراد سے دیسی مرغیاں کھلا رہے تھے۔

دنیا بھر میں جانوروں سے محبت کرنے والے افراد میں مادہ چیتا کے مرنے پر بہت غمگین ہیں جبکہ دوسری طرف مقامی افراد کا موقف یہ ہے کہ چیتا خون خوار ہے اس لیے اسے دیکھتے ہی گولی مارنے کے سوا اور کیا راستہ ہے۔ جن دیہاتوں میں چیتا آجائے وہاں خوف و ہراس ہوتا ہے اور اسے مارنے کے لیے ترکیبیں نکالتے رہتے ہیں۔

متعلقہ تحاریر