اسٹیٹس کی علامت سمجھا جانے والے بلیک بیری کا سنہرا دور ختم

بلیک بیری اب فون کال، ٹیکسٹ میسجز بھیجنے یہاں تک کہ911 پر ہنگامی کال کرنے کے بھی قابل نہیں ہوں گے

ایک زمانہ تھا جب کینیڈا کی معروف سافٹ ویئرکمپنی بلیک بیری دنیا بھر میں مقبول اسمارٹ فونز کمپنیوں میں سے ایک تھی  ، بہتر سکیورٹی اور منفرد ایپس کے ساتھ دستیاب بلیک بیری فونز بہت  تیزی سے مقبول ہوئے ، ایک وقت ایسا بھی آیا کہ ترقی یافتہ ملکوں کے حکمرانوں سمیت دنیا کے ہر قابل ذکر فرد کے ہاتھ میں یہی فون دکھائی دینے لگے۔

ایک دہائی تک فونز کی دنیا میں راج کرنے اور سٹیٹس کی علامت سمجھے جانے والے موبائل  کمپنی  کاسنہرا دور اب ختم ہوگیا ہے ، بلیک بیری نے  آپریٹنگ سسٹم اور سروسز کا سلسلہ چار جنوری سے منقطع کر دیا گیا ہے جس کے بعد موبائل فونز کی تاریخ کاایک سنہرا دور باقاعدہ طور پر ختم ہو گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے 

او آئی سی کانفرنس، اسلام آباد میں موبائل فون سروس بند کرنے پر غور

دبئی ‘پیسا ایوارڈ’ کے دوران فریال محمودکا موبائل فون گم ہوگیا

کمپنی نے کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ 4 جنوری 2022 سے، بلیک بیری 10 اور بلیک بیری 7.1 سافٹ ویئر یا اس سے پہلے کے فونز پر  نیٹ ورکس یا وائی فائی کام نہیں کرے گا۔ بلیک بیری کی جانب سے مزید کہا گیا ہے کہ مزکورہ موبائل فونز اب ڈیٹا ،فون کال ، ٹیکسٹ میسجز بھیجنے یہاں تک کہ911 پر ہنگامی کال کرنے کے بھی قابل نہیں ہوں گے۔

واضح رہے کہ پہلی مرتبہ 2016 میں بلیک بیری کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ ادارہ اب ایک سکیورٹی کمپنی کے طور پر کام کرے گا۔ اس مرحلے پر کینیڈین کمپنی کی جانب سے سمارٹ فون کی تیاری کا سلسلہ روکتے ہوئے اس کے لائسنسنگ اختیارات چینی کمپنی ٹی سی ایل کو منتقل کر دیے گئے تھے۔ ٹی سی ایل کی جانب سے 2020 میں معاہدے کے اختتام تک یہ ڈیواسئز تیار کی جاتی رہیں تاہم ان میں استعمال ہونے والا سافٹ ویئر گوگل کے ملکیتی ادارے الفابیٹ کا اینڈرائیڈ تھا، جسے اگست تک سپورٹ میسر رہے گی تاہم  اب کمپنی نے بڑا اعلان کردیا ہے ۔

Facebook Comments Box