سندھ حکومت اور پی ایس پی کے درمیان مذاکرات کامیاب

ہم وہ لوگ ہیں جنہوں نے کراچی کے عوام کےلئے عہدوں کو لات مار کر اپنے دشمن بنائے،مصطفیٰ کمال

پاک سرزمین پارٹی اور سندھ حکومت کے درمیان مذاکرات کامیاب ، چیئرمین پی ایس پی نے11 سے 18 فروری کے درمیان قانون سازی تک کیلئے دھرنا  مؤخر کرنے کا اعلان کردیا۔

کراچی میں بلدیاتی قانون کے خلاف پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی)  کا چھ روز سے جاری  دھرنا سندھ حکومت کے ساتھ کامیاب  مذاکرات کے بعد ختم کردیا گیا۔

چیئر مین پی ایس پی مصطفیٰ کمال نے کہاکہ ہم وہ لوگ ہیں جنہوں نے کراچی کے عوام کےلئے عہدوں کو لات مار کر اپنے دشمن بنائے ، بلدیاتی قانون  کے حوالے سے دیا جانے والا دھرنا ختم نہیں 18 فروری تک مؤخر کررہے ہیں، 11سے 18 فروری کے درمیان قانون سازی ہوگی ۔

یہ بھی پڑھیے

جماعت اسلامی کے بعد سندھ حکومت کو پی ایس پی اور ایم کیو ایم کے دھرنوں کا سامنا

پی ایس پی نے سندھ لوکل گورنمنٹ بل ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا

انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم میں اختیارات نچلی سطح تک منتقل نہیں ہوئے، ناصر حسین شاہ کو بتادیا ہے کہ قانون بنے گا اور اسی مہینے یہ باتیں قانونی شکل اختیار کریں گی۔ دوسری جانب  وزیربلدیات سندھ ناصر حسین شاہ بھی مذاکرات کے بعد دھرنے میں پہنچے اور خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مصطفیٰ کمال جیت گئے، ہم نے پی ایس پی کی بہت سی باتیں مان لی ہیں۔ ذرائع کے مطابق پی ایس پی اور سندھ حکومت میں صوبائی مالیاتی کمیشن کے معاملے پر اتفاق ہو گیا  جبکہ میٹروپولیٹن کارپوریشن کو شہری حکومت کا نام دینے پر بات چیت جاری رہے گی۔

متعلقہ تحاریر