سندھ حکومت کے صحت سے متعلق دعوے سکھر مرکز صحت کی چھت کی طرح زمین بوس

شہریوں کا کہنا ہے مرکز صحت گاڑھی موری کی عمارت سالوں سے مرمت نہ ہونے کہ وجہ سے مریضوں ،ڈاکٹروں اور عملے کی جان کے لیے خطرہ بن گئی ہے۔

سندھ حکومت کی جانب سے صحت کے حوالے سے کیے جانے والے دعوے صرف زبانی جمع خرچ تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں ، جس کی واضح مثال سکھر کے نواحی علاقے گاڑھی موری کا مرکز صحت ہے۔ مرکز صحت کی عمارت مریضوں کی جان کے لیے خطرہ بن گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سکھر کے قریب ضلع خیرپور کے گاؤں گاڑھی موری میں قائم مرکز صحت کی عمارت کی چھت سے پلستر گرنے لگا ہے ،صحت مرکز سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے علاقہ مکینوں کے لیے بے فیض بننے لگا ہے، شکایات کے باوجود خیرپور کی ضلعی انتظامیہ اور صحت کے حکام نوٹس تک لینے سے گریزاں ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

زیادتی کے واقعات کی روک تھام کیلیے حلیم عادل شیخ نے قرارداد پیش کردی

ڈاکٹر نوشین اور ڈاکٹر نمرتا کماری  کے کیس میں چونکا دینے والا انکشاف

گاؤں گاڑھی موری میں علاقے کے لوگوں کو علاج و معالجے کی غرض سے قائم بنیادی صحت مرکز منتخب نمائندوں ، ضلع انتظامیہ اورصحت حکام کی عدم توجہی کے باعث علاقے کے لوگوں کے بے سود اور بے فیض بنتا جارہاہے۔

منتخب نمائندوں اور ضلعی انتظامیہ اور صحت حکام کی عدم توجہی کے باعث صحت مرکز کی عمارت سالوں سے مرمت نہ ہونے کہ وجہ سے وہاں پر آنے والے مریضوں ،ڈاکٹروں اور اسپتال کے عملے کی جان کے لیے خطرہ بن گئی ہے۔

عمارت کی چھت کے پلستر گرنے لگے ہیں گذشتہ روز او پی ڈی کے کمرے کی چھت کا پلستر اس وقت آن گرا جب ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر خواتین اور بچوں کا معائنہ کرنے میں مصروف تھے۔

چھت کا پلستر گرنے سے ڈاکٹر اور مریض تو بچ گئے لیکن اسپتال میں خوف وہراس پھیل گیا ایک طرف اسپتال کی عمارت خستہ حالی کا شکار ہے اور اپنی حالت پر نوحہ کناں ہے تو دوسری جانب اسپتال کی ڈسپنسری میں ادویات کی عدم دستیابی کی وجہ سے مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

شہریوں نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے مرکز صحت گاڑھی موری میں الٹراساؤنڈ مشین گذشتہ 7 سالوں سے خراب ہے اسپتال میں ایمبولینس تو موجود ہے لیکن ڈرائیور نہ ہونے کی وجہ سے علاقے کے لوگ اس سہولت سے بھی محروم ہیں۔

علاقہ مکینوں کی شکایات کے باوجود منتخب نمائندوں ، ضلعی انتظامیہ اور صحت حکام کی چشم پوشی برقرار ہے، جس سے علاقے کے لوگوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور انہوں نے انتباہ دیا ہے کہ خستہ حال عمارت میں کوئی واقعہ پیش آیا تواس کے ذمہ دار علاقے کے منتخب نمائندے ، ضلع انتظامیہ اور صحت حکام ہونگے۔

متعلقہ تحاریر