عمران خان کیا جسٹس عامر فاروق پر عدم اعتماد: توشہ خانہ کیس سے الگ کرنے کا مطالبہ کردیا

چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ اس کیس سے ان کے سیاسی کیریئر کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق پر عدم اعتماد کردیا ، توشہ خانہ کیس کی سماعت سے جسٹس عامر فاروق کو الگ کرنے کا مطالبہ کردیا ہے۔

پیر کو بیرسٹر گوہر کے توسط سے دائر کی گئی درخواست میں عمران خان نے دلیل دی ہے کہ اگر جسٹس فاروق کیس کی سماعت نہیں کرتے ہیں تو یہ غیر جانبداری کے مفاد میں ہوگا۔ توشہ خانہ کیس سے متعلق عدالت کا 5 مئی کا حکم تاحال زیر التوا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

توہین عدالت کیس: شیریں مزاری کی گرفتاری پر آئی جی اسلام آباد اکبر نواز کے معصومانہ جوابات

دہشتگردی کیس: شاہ محمود کی ضمانت میں بغیر کارروائی کے 10 جولائی تک توسیع

عمران خان نے اپنی دلیل میں مزید کہا ہے کہ دو ججز ٹیرئین وائٹ کیس ان کے حق میں فیصلہ دیا تھا لیکن جسٹس عامر فاروق نے پریس ریلیز کے ذریعے اسے ختم کردیا تھا۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ اس طرح کے فیصلے جسٹس عامر فاروق کی غیر جانبداری پر ’منفی‘ اثرات مرتب کرتے ہیں۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے مزید کہا کہ انہیں توشہ خانہ اور ٹیرئین وائٹ جیسے مقدمات میں زبردستی پھنسایا جا رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مقدمات کو مناسب طریقے سے نمٹانے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ ان کے پورے سیاسی کیریئر کو متاثر کر سکتے ہیں۔

چیئرمین تحریک انصاف نے اپنی دلیل میں مزید کہا ہے کہ میں متعدد بار ویڈیو لنک کے ذریعے عدالت میں پیش ہونے کی درخواست کی لیکن صورتحال کی ’جلدی‘ کے باوجود اس معاملے کا فیصلہ نہیں کیا گیا۔

اس نے یہ بھی دلیل دی ہے کہ باقاعدگی سے پیش ہونے کے باوجود، بائیو میٹرک تصدیق کروانے کی شرط کو ختم نہیں کیا گیا جس سے ان کے ‘انصاف تک رسائی کا حق’ متاثر ہوا۔

متعلقہ تحاریر