کراچی میں کرونا سینٹر کا عملہ غائب، عوام پریشان

کرونا سینٹر میں آنے والے مریض عملے کی غیرموجودگی کے باعث ٹیسٹ کرائے بغیر ہی گھروں کو واپس لوٹنے پر مجبور ہیں۔

ایک طرف دنیا کرونا کی خطرناک وباء سے لڑ رہی ہے تو دوسری جانب پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں قائم کرونا سینٹر کا عملہ غائب ہے۔

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی کے علاقے ملیر میں قائم کرونا سینٹر کے عملے کی پول کھل گئی ہے۔ سندھ حکومت کی جانب سے قائم کیے گئے سینٹر کے عملے کی سنجیدگی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ عملہ غائب ہے اور کرونا سینٹر میں ویرانی چھائی ہوئی ہے۔ عملے کی غیر موجودگی کی وجہ سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

کرونا کی وباء سے بچاؤ کے لیے قائم سینٹر میں آنے والے مریض عملے کی غیرموجودگی کے باعث کرونا ٹیسٹ کرائے بغیر ہی گھروں کو واپس لوٹنے پر مجبور ہیں۔ ایک مریض نے کرونا سینٹر میں ویرانی کے منظر کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرتے ہوئے بتایا ہے کہ وہ تیز بخار اور زکام کے باعث ملیر میں قائم کرونا سینٹر پر پہنچے تھے لیکن طویل انتظار کے بعد انہیں واپس جانا پڑا۔

یہ بھی پڑھیے

کرونا ایس او پیز کی خلاف ورزی پر اسکول سیل، پرنسپل گرفتار

نیوز 360 نے جب اس معاملے کی تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ کرونا سینٹر کا عملہ تاخیر سے آتا ہے اور جلدی واپس چلا جاتا ہے۔ اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ وہاں ٹیسٹ کی تعداد کم ہے جس کی وجہ سے عملہ وقت پر نہیں آتا ہے۔

متعلقہ تحاریر