پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کی ہیلپ لائن پر بوگس کالز کی بھرمار

پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے مطابق ہیلپ لائن پر مئی میں موصول ہونے والی کالز میں سے 13 لاکھ 85 ہزار 410 غیرمتعلقہ تھیں۔

پاکستان کی صوبہ پنجاب کی حکومت کی جانب سے شروع کی گئی سیف سٹیز اتھارٹی کی ہیلپ لائن ون فائیو (15) پر شہریوں نے جعلی اور غیرمتعلقہ کالز کا تانتا باندھ دیا ہے۔ سیف سٹیز اتھارٹی کے مطابق رواں سال مئی کے مہینے میں ہیلپ لائن پر موصول ہونے والی 13 لاکھ 85 ہزار 410 کالز غیرمتعلقہ تھیں۔

پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی نے رواں برس مئی کے دوران ون فائیو پر موصول ہونے والی کالز کا ریکارڈ جاری کردیا ہے۔ ریکارڈ کے مطابق ہیلپ لائن پر مئی کے مہینے میں 22 لاکھ 61 ہزار 432 کالز موصول ہوئیں جن میں سے تقریباً 14 لاکھ کالز غیرمتعلقہ تھیں۔

یہ بھی پڑھیے

پی ایس ایل 6 کے میچز دیکھنے کے لیے شائقین کو رت جگا کرنا ہوگا

ترجمان سیف سٹیز اتھارٹی کے مطابق 1 لاکھ 71 ہزار 787 شکایات پر پولیس کی جانب سے بروقت مدد فراہم کی گئی۔ جبکہ شہریوں کی جانب سے مختلف معلومات کے حصول کے لیے 79 ہزار 758 کالز موصول ہوئیں۔

رواں سال مئی کے مہینے میں ٹریفک سے متعلق موصول ہونے والی 7 ہزار 693 کالز پر رہنمائی فراہم کی گئی جبکہ اتھارٹی کے لاسٹ اینڈ فاؤنڈ سینٹر کی مدد سے 13 گمشدہ افراد کو اپنوں سے ملوایا گیا۔ جبکہ 156 موٹر سائیکلز، گاڑیاں اور رکشوں کی نشاندہی کر کے مالکان کے حوالے کروائے گئے۔

ترجمان سیف سٹیز اتھارٹی کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے ہیلپ لائن ون فائیو (15) شہریوں کی سہولت کے لیے شروع کی گئی ہے۔ شہریوں سے پرزور اپیل ہے کہ وہ ہیلپ لائن پر ضرورت کے وقت ہی کالز کریں اور غیرضروری اور غیرمتعلقہ کالز سے اجتناب کریں۔

واضح رہے کہ رواں سال مارچ کے مہینے میں سیف سٹیز اتھارٹی کو ہیلپ لائن پر 2 لاکھ 83 ہزار 96 کالز موصول ہوئی تھیں جن میں سے 1 لاکھ 68 ہزار 50 غیرمتعقلہ تھیں۔

متعلقہ تحاریر