طلباء کی بے ہوشی کے باعث تعلیمی اداروں کے اوقات کار تبدیل

اسلام آباد کے تعلیمی ادارے پیر سے جمعرات صبح 7 سے 11 بجے تک کھلے رہیں گے۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں گرمی اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے باعث مختلف اسکولز میں طلباء بے ہوش ہوگئے۔ صورتحال کے پیش نظر تعلیمی اداروں کے اوقات کار میں کمی کردی گئی ہے۔

ملک کے دیگر شہروں کی طرح وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھی ان دنوں شدید گرمی کا سلسلہ جاری ہے۔ گزشتہ روز شہر کا درجہ حرارت 43 ڈگری سینٹی گریڈ تک جاپہنچا۔ گرمی میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے باعث مختلف اسکولز میں درجنوں طلباء بے ہوش ہوگئے۔ اسلام آباد کے علاقے مل پور بارہ کہو میں گورنمنٹ فیڈرل اسکول میں 25 طلباء کے بے ہوش ہونے کی اطلاعات سامنے آئیں۔ چند طلباء کی ناک سے خون بہنا تک شروع ہوگیا، جس کے بعد انہیں طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا۔

صورتحال کے پیش نظر اسلام آباد کے تعلیمی اداروں کے اوقات کار کم کردیئے گئے ہیں۔ اسکول صبح ایک گھنٹہ قبل لگانے اور جلدی چھٹی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ طلبا کو ہفتے میں 2 سے 4 دن بلانے کا اعلان بھی سامنے آیا ہے۔ نوٹیفکیشن کے مطابق تعلیمی ادارے پیر سے جمعرات تک صبح 7 سے 11 بجے تک کھلے رہیں گے جبکہ شام کی شفٹ والے تعلیمی ادارے جمعہ اور ہفتہ کو کھلیں گے۔ تعلیمی اداروں میں 50 فیصد طلباء کو بلانے کی اجازت ہوگی۔

یہ بھی پڑھیے

تعلیمی اداروں کی فیس میں 20 فیصد کمی کے مثبت اور منفی پہلو

والدین کی شدید گرمی میں تعلیمی ادارے کھولنے پر تنقید

ملک میں کرونا وائرس کے کیسز میں کمی کے بعد وفاقی حکومت نے 7 جون سے تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ کیا تھا تاہم والدین کی جانب سے شدید گرمی میں تعلیمی ادارے کھولنے کے فیصلے پر تنقید کی جارہی ہے۔ والدین بچوں کی صحت کے حوالے سے تشویش کا شکار ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ہر سال جون سے اگست کے وسط تک گرمیوں کی چھٹیاں دی جاتی رہی ہیں مگر اب شدید گرمی میں اسکول کھول دیئے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ اسلام آباد میں ان دنوں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ متعدد تعلیمی اداروں میں پنکھے اور پینے کے پانی کی سہولت موجود نہیں ہے۔ ایسے میں بچوں کے ڈی ہائیڈریشن اور ہیٹ اسٹروک کا شکار ہونے کا خدشہ ہے۔

متعلقہ تحاریر