مفتی عبدالقوی کے ٹوٹے لیک ہونے سے رُک نہیں رہے

منگل کی صبح سے سوشل میڈیا پر مفتی عبدالقوی کی ایک اور نازیبا ویڈیو وائرل ہورہی ہے۔

مقتول ماڈل قندیل بلوچ کے ساتھ سیلفی اور ٹک ٹاکر حریم شاہ کے ساتھ متنازع ویڈیوز سے خبروں میں آنے والے مفتی عبدالقوی کی ایک اور نازیبا ویڈیو لیک ہوگئی ہے۔

پاکستان میں منگل کی صبح سے سوشل میڈیا پر مفتی عبدالقوی کی ایک اور نازیبا ویڈیو وائرل ہونے لگی ہے جس میں انہیں برہنہ حالت میں کسی خاتون سے قابل اعتراض گفتگو کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیو پر مولانا فضل الرحمان خاموش

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مفتی عبدالقوی جس خاتون سے ویڈیو کال پر بات کر رہے تھے انہوں نے اپنا کیمرہ بند کیا ہوا تھا اور صرف مفتی عبدالقوی کی ریکارڈنگ ہورہی تھی۔ ریکارڈنگ کے بعد جب یہ ویڈیو لیک ہوئی تو اس میں خاتون کی آواز بھی ایڈیٹنگ کے ذریعے بند کردی گئی تاکہ یہ معلوم نہ ہوسکے کہ وہ کس کے ساتھ گفتگو کر رہے تھے۔

واضح رہے کہ مفتی عبدالقوی کی متنازع ویڈیو لیک ہونے کا یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے۔ مفتی عبدالقوی خبروں میں آئے ہی اپنی متنازع ویڈیوز اور تصاویر کی وجہ سے تھے۔ سب سے پہلے اُن کی مقتول قندیل بلوچ کے ساتھ قابل اعتراض تصاویر لیک ہوئی تھیں جس کے بعد یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔

قندیل بلوچ کے ساتھ قابل اعتراض تصاویر کے بعد مفتی عبدالقوی کی معروف ٹک ٹاکر حریم شاہ کے ساتھ بھی متنازع ویڈیوز لیک ہوچکی ہیں۔

تاہم منگل کو نئی لیک ہونے والی ویڈیو میں یہ معلوم نہیں ہے کہ وہ کس سے بات کر رہے ہیں۔

مفتی عبدالقوی کی ویڈیو لیک ہونے کے بعد سوشل میڈیا صارفین میں کافی غصہ پایا جارہا ہے۔ ٹک ٹاکر حریم شاہ نے اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں لکھا کہ ایسے بے شرم لوگوں کو جوتے مارنے چاہئیں۔

اس وقت پاکستان میں ٹوئٹر پر بھی ’مفتی قوی‘ کا ہیش ٹیگ ٹاپ ٹرینڈز میں ہے۔ صارفین اس ہیش ٹیگ کو استعمال کرتے ہوئے مفتی عبدالقوی پر کڑی تنقید کر رہے ہیں۔ صحافی ضرار کھوڑو نے ٹوئٹر پر لکھا کہ مفتی عبدالقوی کی ویڈیو دیکھنے کے بعد دل کر رہا ہے کہ آنکھوں میں تیزاب ڈال لوں۔

ایک صارف نے مفتی عبدالقوی کو حریم شاہ کے ہاتھوں پڑنے والے تھپڑ کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ غلط وقت پر صحیح تھپڑ۔

سیدہ ترمزی نے لکھا کہ قندیل بلوچ نے مفتی عبدالقوی کے بارے میں جو کچھ بھی کہا تھا وہ سچ تھا، یہ وقت نے ثابت کردیا ہے۔

واضح رہے کہ چند روز قبل ہی لاہور کے ایک مدرسے میں مفتی عزیز الرحمان کی جانب سے نوجوان طالبعلم کو بدفعلی کا نشانہ بنانے کی ویڈیو لیک ہوئی تھی۔

متعلقہ تحاریر