لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن میں دھماکہ

ذرائع کے مطابق جائے حادثے سے کچھ فاصلے پر مشہور مذہبی شخصیت کا گھر ہے۔

صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کے علاقے جوہر ٹاؤن میں دھماکے کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار سمیت کم از کم 3 افراد جاں بحق اور 17 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ نیوز 360 کے ذرائع کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ سے کچھ فاصلے پر مشہور مذہبی شخصیت کی رہائش گاہ ہے۔

لاہور کے پوش علاقے جوہر ٹاؤن میں زوردار دھماکہ ہوا ہے۔ اس دھماکے کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار سمیت کم از کم 3 افراد جاں بحق اور 17 زخمی ہوگئے ہیں جبکہ کئی افراد کی حالت تشویشناک ہے۔ دھماکہ اتنا شدید تھا کہ قریبی عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔ دھماکے کے بعد ریسکیور ٹیموں نے فوری طور پر زخمیوں کو قریبی اسپتال منتقل کیا جبکہ پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ دھماکے کے بعد جناح اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

کیا حکام گلشن اقبال میں گیس لیکج سے دھماکے کے منتظر ہیں؟

دھماکے کی جگہ پر گاڑیوں کے شورومز موجود ہیں جہاں کھڑی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا جبکہ ایک رکشہ مکمل طور پر تباہ ہوگیا۔ پولیس کے مطابق جائے حادثہ پر 4 فٹ گہرا گڑھا پڑ گیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکہ گیس لیکج کی وجہ سے ہوا ہے لیکن نیوز 360 کے ذرائع کے مطابق اس دھماکے کی شدت پولیس کے بیان کے نفی کر رہی ہے۔

نیوز 360 کے ذرائع کا کہنا ہے کہ جائے حادثے سے کچھ فاصلے پر مشہور مذہبی شخصیت کا گھر ہے۔

ادھر وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے دھماکے کا نوٹس لے لیا ہے۔ انہوں نے آئی جی پنجاب انعام غنی سے حادثے کی رپورٹ طلب کرتے ہوئے تحقیقات کا بھی حکم دیا ہے۔

متعلقہ تحاریر