شفقت محمود کا طلبہ کے لیے نیک خواہشات کا اظہار سعد رفیق برہم

وفاقی وزیر تعلیم کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کے مطالبے پر انٹر کے امتحانات ملتوی نہیں کرسکتے۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے آج سے شروع ہونے والے امتحانات میں شرکت کرنے والے طلبہ کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے جبکہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی خواجہ سعد رفیق نے حکومتی فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

وفاقی دارالحکومت سمیت صوبہ پنجاب، صوبہ خیبرپختون خوا اور صوبہ بلوچستان میں آج سے انٹر کے امتحانات شروع ہونے جارہے ہیں جبکہ صوبہ سندھ میں 4 جولائی سے نویں اور دسویں کے امتحانات جاری ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

ملالہ کے والد نے وسیع القلبی کی نئی مثال قائم کردی

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے گزشتہ روز سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ جو طلبہ وقت مانگ رہے ہیں وہ سپلیمنٹری امتحانات میں شرکت کرسکتے ہیں۔ تمام بورڈ کے سپلیمنٹری امتحانات 2 سے 3 ماہ بعد ہوں گے۔

 

وفاقی وزیر تعلیم نے مزید لکھا ہے کہ جن طلبہ کی تیاری ہے ان کو امتحانات سے روک کر ان کے ساتھ زیادتی نہیں کرسکتے۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا تھا کہ پچھلے سال کرونا کی شدید لہر کی وجہ سے امتحانات ملتوی کرنا پڑے تھے اور بچوں کو بغیر امتحانات کے اگلی کلاسز میں ترقی دینا پڑی تھی مگر اس سال بغیر امتحانات کے بچوں کو پرموٹ نہیں کیا جاسکتا ہے۔

وزیر تعلیم کے اس اقدام کے خلاف طلبہ نے سوشل میڈیا پر بھرپور مہم چلائی تھی اور وزیر تعلیم کے استعفے کا بھی مطالبہ کیا تھا۔ طلبہ کا کہنا تھا کہ وبائی مرض کی وجہ سے ان کی تیاری مکمل نہیں ہوسکی اور امتحانات میں ان کی کارکردگی متاثر ہوسکتی ہے۔

9 جولائی کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما سعد رفیق اور احسن اقبال سستی مقبولیت حاصل کرنے کے لیے طلبہ کو سیاست میں گھسیٹ رہے ہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا ہے کہ بلوچستان اورسندھ میں امتحانات پہلے ہی ہوچکے ہیں ، لہذا دوسرے طلبہ سے مختلف سلوک نہیں کیا جاسکتا۔

دوسری جانب مسلم لیگ نون کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی خواجہ سعد رفیق نے وزیر تعلیم شفقت محمود پر تنقید کرتے ہوئے انہیں علامہ کہہ کر مخاطب کیا ہے۔

 

واضح رہے کہ میٹرک اور انٹر کے امتحانات ملتوی نہ کرنے پر گزشتہ روز حزب اختلاف کی تمام جماعتوں نے قومی اسمبلی سے واک آؤٹ بھی کیا تھا۔

Facebook Comments Box