عامر لیاقت کی قلابازی، طالبان کے حمایتی بن گئے

اینکر پرسن کے مطابق طالبان اپنے مخالفین سے لڑ کر اقتدار پر قبضہ کرلیں تو کوئی برائی نہیں۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اور معروف میزبان عامر لیاقت نے طالبان کی حمایت میں بیان جاری کردیا۔ سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ اینکر پرسن کا کہنا ہے کہ اگر طالبان مخالفین کو شکست دے کر اقتدار پر قبضہ کرلیں تو اس میں کیا برائی ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پراپنے بیان میں عامر لیاقت نے کہا کہ انہیں ہماری قوم کی دانشوری سمجھ نہیں آرہی ہے، لوگ طالبان کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ پر تشویش کا اظہار کررہے ہیں۔ انہوں نے لکھا کہ اس میں کوئی غلط بات نہیں کہ طالبان افغانستان میں اپنے مخالفین سے لڑ کر اقتدار پر قبضہ کرلیں۔ عامر لیاقت نے طنزیہ انداز میں سوال کیا کہ ملا ضعیف کی بےعزتی کی گئی اور ملاعمر کو دہشتگرد قرار دے کر انہیں شہید کردیا گیا، کیا یہ سب درست تھا؟

یہ بھی پڑھیے

طالبان کی پیش قدمی، امریکی جریدے کے اشارے

ایک اور ٹوئٹ میں عامر لیاقت نے پشتو زبان میں لکھا کہ افغانستان میں طالبان کے ساتھ ظلم ہوا ہے۔ اب اگر وہ اپنے مخالفین سے لڑتے ہیں تو اس میں کوئی بری بات نہیں ہے۔ بقول عامر لیاقت ہمیں حقائق پر مبنی تجزیہ دینا ہوگا۔

واضح رہے کہ افغانستان سے امریکی فوج کی واپسی کے بعد طالبان نے افغانستان کے 85 فیصد علاقوں پر قبضے کا دعویٰ کیا ہے۔ طالبان کی پیش قدمی سے متعلق خبریں بھی سامنے آرہی ہیں۔ افغانستان میں خانہ جنگی پر خطے کی صورتحال خراب ہونے کے خدشات میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔

Facebook Comments Box