بلاول بھٹو کے حلقے کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار

بانی پیپلز پارٹی شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کے آبائی شہر نوڈیرو کی سڑک ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے سے علاقہ مکینوں کو سخت پریشانی کا سامنا ہے۔ مقامی افراد کا کہنا ہے کہ لاڑکانہ پر 90 ارب روپے خرچ کرنے کا دعویٰ کرنے والے سڑکیں بھی نہیں بنا سکے۔

ضلع لاڑکاںہ میں ترقیاتی کاموں کے نام پر پیپلزپارٹی نے 90 ارب روپے خرچ کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے حلقے این اے 200 کی حالت زار سے علاقہ مکینوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔

لاڑکانہ سے متصل نوڈیرو شہر کی مصروف ترین سڑک گزشتہ کئی ماہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے۔ سڑک کے اطراف گڑھے پڑنے سے حادثات بھی روز کا معمول ہوگئے ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ 3 ماہ گزرنے کے باوجود روڈ کا مرمتی کام بھی شروع نہیں ہوسکا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

سیاست سے کھیل کے میدان تک لاڑکانہ کے نوجوان چھاگئے

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ اس سڑک سے روزانہ لاکھوں افراد سفر کرتے ہیں۔ سڑک کی حالت زار کے باعث حادثات بھی رونما ہوتے ہیں جس سے کئی لوگ زخمی ہوئے ہیں جبکہ کئی ہلاکتیں بھی ہوچکی ہیں۔

ترقیاتی کاموں پر 90 ارب روپے خرچ کرنے کے دعوے کرنے والی سندھ حکومت کی جانب سے نوڈیرو کی چار کلومیٹر طویل سڑک کا کام بروقت مکمل نہ کرنا پیپلزپارٹی کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

واضح رہے کہ سندھ حکومت نے لاڑکانہ کی ترقیاتی اسکیموں کے نام پر 90 ارب روپے خرچ کرنے کا دعویٰ کیا تھا لیکن شہر میں کوئی خاطر خواہ کام نہ ہونے اور مبینہ کرپشن پر سندھ ہائیکورٹ نے بھی رپورٹ طلب کی تھی لیکن انتظامیہ جواب جمع نہیں کروا سکی تھی۔

رپورٹ: ذوہیب احمد ابڑو

Facebook Comments Box