مرتضیٰ وہاب ایڈمنسٹریٹر بننے سے پہلے ہی امتحان میں فیل

ترجمان سندھ حکومت کا کہنا ہے 72 گھنٹوں سے آلائشیں اٹھانے کے کام میں مصروف ہیں تاہم شہر میں جگہ جگہ آلائشوں کے ڈھیر انتظامیہ کی ناکامی کا منہ چڑا رہی ہیں۔

سندھ حکومت کے شھر میں آلائشیں اٹھانے کے دعوے صرف دعوے تک محدود رہ گئے۔ ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب ایڈمنسٹریٹر بننے سے قبل پہلے ہی امتحان میں فیل ہوگئے۔ پورے کراچی میں آلائشیں بری طرح سے بھکری پڑی رہیں کوئی اٹھانے والا نہیں تھا۔ قربانی کے جانوروں کی آلائشیں ٹھکانے لگانے کا معاملہ عید کے ایام میں کھٹائی میں پڑا رہا۔

کراچی شہر کے تمام اضلاع میں آلائشیں اٹھانے کا آپریشن سست روی کا شکار رہا، ضلع وسطی میں صورتحال سب سے زیادہ خراب رہی، لیاقت آباد میں ڈاکخانہ سے سندھی ہوٹل تک آلائشیں سڑک پر موجود رہیں ، یاسین آباد پر سڑک کنارے پڑی آلائشیں انتظامیہ کا منہ چڑاتی رہیں۔

یہ بھی پڑھیے

اس سال عید الاضحیٰ زرا منفرد، تھوڑی احتیاط کے ساتھ

نیو کراچی، نارتھ کراچی، بفرزون، ناظم آباد سے بھی آلائشیں نہ اٹھائی جاسکیں، عزیز آباد، حسین آباد آلائشوں کی بدبو اور تعفن سے مہکتا رہا مگر انتظامیہ کے کان پر جوں تک نہ رینگی، ضلع جنوبی میں اولڈ سٹی ایریا، لیاری، گارڈن کے علاقوں سے آلائشیں اٹھانے کوئی نہیں پہنچا۔

مرتضیٰ وہاب ایڈمنسٹریٹر

ضلع کورنگی میں لانڈھی، شاہ فیصل، ماڈل کالونی، سعودآباد کی گلیاں تاحال آلائشوں سے اٹھی پڑی ہیں۔

ضلع کیماڑی میں بلدیہ ٹائون، اتحاد ٹائون، مسان چوک، پدر گراؤنڈ تاحال آلائشوں کے گڑھ بنے ہوئے ہیں، ضلع غربی میں اورنگی ٹائون، بنارس، کٹی پہاڑی کے علاقوں سے تعفن اٹھ رہا ہے

ضلع شرقی میں گلستان جوہر، سچل، گوٹھ، بھٹائی گوٹھ کے علاقوں میں آلائشیں سڑکوں پر پڑی رہیں، ضلع ملیر میں قائد آباد، شیرپاؤ، گلشن حدید اور بن قاسم کے علاقوں سے آلائشیں نہیں اٹھائی جاسکیں

شہر قائد بھر میں 80 سے زائد کلیکشن پوائنٹس بنائے گئے تھے، جبکہ شہر کے تمام اضلاع میں یوسی کی سطح پر کلیکشن پوائنٹس بھی قائم کئے گئے تھے۔

ضلع جنوبی، ضلع کیماڑی اور ضلع غربی کی آلائشیں گوند پاس حب ریور روڈ منتقل کی جاتی رہیں۔ ضلع شرقی اور ضلع وسطی سے جمع ہونے والی آلائشوں کو جام چاکرو منتقل کیا جاتا رہا۔

ضلع کورنگی اور ضلع ملیر کی آلائشیں شرافی گوٹھ سائٹ بھیجی جاتی رہیں۔ 2 روز میں 14 ہزار ٹن سے زائد آلائشیں جام چاکرو لینڈ فل سائٹ پہنچائی گئی۔ حب ریور روڈ پر واقع گوند پاس لینڈ فل سائٹ پر 14 ہزار ٹن کے قریب آلائشیں منتقل کی گئیں۔ شرافی گوٹھ لینڈ فل سائٹ پر 3 ہزار ٹن آلائشیں پہنچائی گئیں۔

مرتضیٰ وہاب ایڈمنسٹریٹر

ایم ڈی سالڈ ویسٹ بورڈ مینجمینٹ بورڈ کا کہنا تھا کہ دوسرے روز بھی صبح 6 بجے سے ضلعی میونسپل کارپوریشنز اور کنٹونمنٹ بورڈز کا مشترکہ آپریشن جاری رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ آلائشیں ٹھکانے لگانے کا آپریشن عید کے تینوں دن جاری رہے گا۔

سندھ حکومت

ترجمان حکومت سندھ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب اور کراچی شہر کے متوقع ایڈمنسٹریٹر نے شہر کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا ،مرتضی وہاب کا کہنا تھا کہ میں نے طارق روڈ ،بہادر آباد ، لیاقت آباد اور ضلع وسطی کے علاقوں کا دورہ کیا ہے، آلائشیں اٹھانے کے حوالے سے شکایات موصول ہو رہی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ 72 گھنٹوں سے کام کر رہے ہیں، آلائشیں اٹھانے کے حوالے سے سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ اپنی پوری کوشش کر رہا ہے، ہم نے شہر میں 85 کلیکشن پوائنٹ بنائے ہیں۔ ہماری کوشش ہے کہ آلائشوں کو زیادہ دیر نہ پڑے رہنے دیں۔ آلائشیں کو پھاڑ کر چربی جمع کرنے والوں کی جانب سے مشکلات کا سامنا ہے آپ کی نشاندہی پر پولیس سے بات کر رہا ہوں ، شہریوں سے بھی اپیل ہے کہ ہمارے ساتھ تعاون کریں تاکہ میونسپل سروسز کے اداروں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

اپوزیشن کا موقف

پاکستان مسلم لیگ فنکشنل ڈسٹرکٹ سینٹرل کے ذمہ داران اور کارکنان نے عید کے دوسرے روز بھی علاقوں میں صاف ستھرائی کی مہم جاری رکھی۔

پاکستان مسلم لیگ فنکشنل سندھ کے جنرل سیکریٹری سردار عبدالرحیم  کی خصوصی  ھدایت پر فنکشنل لیگ کراچی زون رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینر سلمان فیاض اور ڈسٹرکٹ سینٹرل کے جنرل سیکریٹری ذاکر پٹنی کی سربراہی میں پی ایس 123. 124 ۔ 126 ۔ 127 ۔ اور 128 کے علاقوں سے آلائشیں اٹھانے کا سلسلہ عید کے دوسرے دن بھی جاری رکھا۔

فنکشنل لیگ کے کارکنوں نے اپنی مدد آپ کے تحت ہزاروں کے تعداد میں آلائشیں گلی محلوں سے اٹھا کر ٹھکانے لگائیں۔ اس موقع پر عوام میں بڑا جوش و خروش دیکھنے میں آیا۔ فنکشنل لیگ کے کارکنان کا کہنا تھا کہ آلائشیں اٹھانے کا سلسلہ عید کے تیسرے روز بھی جاری رہے گا، تمام گلیوں اور چوراہوں کو گردوغبار سے پاک کیا جائے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ فنکشنل لیگ کے پرچموں، بینرز اور پمفلٹ کے ذریعے عوام میں علاقوں کو صاف ستھرا رکھنے کی آگاہی بھی دی گئی۔

Facebook Comments Box