قمبر کے قریب سم شاخ کا پل خستہ حالی کا شکار

علاقہ مکینوں کے مطابق پل ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے سے حادثات روز کا معمول بن گئے ہیں۔

قمبر کے قریب سم شاخ کا پل خستہ حالی کا شکار ہے، جس سے روزانہ کی بنیاد پر علاقہ مکینوں اور مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

سندھ میں 13 سال سے اقتدار میں رہنے والی پیپلزپارٹی اپنے حلقوں کے عوام کے مسائل بھی حل کرنے میں ناکام ہے۔ قمبر شہر سے 3 کلو میٹر کے فاصلے پر قائم سم شاخ کا پل پچھلے کئی ماہ سے زبوں حالی کا شکار ہے۔ پل سے روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں گاڑیاں گزرتی ہیں جس کے باعث مسافروں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں۔

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ اس راستے سے کراچی اور بلوچستان جانے والی گاڑیاں گزرتی ہیں۔ پل کے خستہ حال ہونے سے ماضی میں کئی حادثات رونما ہوچکے ہیں۔ ان حادثات نے نہ صرف لوگوں کو زندگی بھر کے لیے معذور کردیا بلکہ کئی لوگ اپنی جانیں بھی گنوا بیٹھے۔

یہ بھی پڑھیے

بلاول بھٹو کے حلقے کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار

ڈرائیورز کے مطابق حکومت ان سے ٹیکس تو وصول کرتی ہے لیکن اس کے بدلے ترقیاتی کام نہیں ہورہے۔ 8 ماہ سے سڑک کے اطراف گڑھے پڑگئے ہیں اور پل ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے مگر کسی نے نوٹس نہیں لیا۔

علاقہ مکینوں نے پل پر مٹی ڈال کر اپنی مدد آپ کے تتحت راستہ بنایا تھا لیکن اب نہر میں پانی آنے سے مٹی بہہ گئی ہے اور پل میں گڑھے بن چکے ہیں جس کی وجہ سے مالی اور جانی نقصان کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔ اہل علاقہ نے منتخب نمائندوں اور چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری سے مطالبہ کیا ہے کہ جلد از جلد پل کی خستہ حالی کا نوٹس لیتے ہوئے اس کی مرمت کرائی جائے۔

Facebook Comments Box