لڑائی لڑائی معاف کرو کرونا کا گند صاف کرو

سندھ میں جزوی لاک ڈاؤن کے بعد وفاقی اور سندھ حکومت کے وزراء کے درمیان بیانات کی جنگ جاری ہے۔

لڑائی لڑائی معاف کرو کرونا کا گند صاف کرو بالکل ایسی ہی صورتحال اس وقت پاکستان کی ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے صوبہ سندھ اور خصوصاً کراچی میں جزوی لاک ڈاؤن کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی قیادت کی جانب سے سندھ حکومت کے خلاف بیانات کا ایک محاذ کھول دیا ہے۔ پی ٹی آئی اور پی پی پی کے درمیان اس لڑائی نے کورونا وائرس کے خلاف قومی کوششوں کے فوائد کو روک دیا ہے۔

پاکستان نے 3 کروڑ افراد کو کرونا ویکسین کے ٹیکے لگانے کا سنگ میل عبور کرلیا ہے ، مگر اس کامیابی کی خوشی کو منانے کی بجائے وفاقی وزراء اور صوبائی وزراء سندھ میں لاک ڈاؤن کے فیصلے پر سیاسی جھگڑے میں مصروف ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

ڈیلٹا ویریئنٹ لہر، سندھ حکومت کے اقدام پر کراچی پولیس نے پانی پھیر دیا

سندھ میں جزوی لاک ڈاؤن کے بعد دونوں سیاسی پارٹیاں ایک دوسرے پر کرونا وائرس کے بحران کو غلط طریقے سے سنبھالنے کا الزام لگا رہی ہیں اور اس معاملے کو سیاسی رنگ دیا جارہا ہے۔

دونوں پارٹیوں کی جانب سے بیان بازی کے بعد نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر بھی تنقید کی زد میں آگیا ہے، این سی او سی کووڈ 19 کے خلاف جنگ میں مرکزی کردار ادا کررہا ہے۔

صوبے اور مرکز کے درمیان صف بندی نے وبائی امراض کے خلاف اجتماعی کوششوں پر ٹھنڈا پانی پھیر دیا ہے۔

تجزیہ کاروں کا کہناہے کہ پاکستان میں تمام حکومتوں کی مشترکہ کوششوں کی وجہ سے کوویڈ 19 کی پہلی 3 لہروں کو کامیابی سے شکست دی گئی تھی۔ انہوں نے کرونا وائرس کی چوتھی لہر کو شکست دینے کے لیے اسی قسم کے اتحاد کی ضرورت پر دیا ہے کیونکہ یہ ڈیلٹا ویریئنٹ کی وبا کو پہلے سے خطرناک قرار دیا جا رہا ہے۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی اور پی پی پی کو صورتحال کی سنگینی کا مکمل ادراک کرتے ہوئے تمام مسائل کو خوش اسلوبی سے حل کرنا چاہیے۔

دوسری جانب عوام نے اس بات کا شکوہ کیا ہے اگر وفاقی اور صوبائی حکومت کے درمیان لڑائی جاری رہی تو پاکستان بھی کہیں ان ممالک کے صف میں شامل نہ کیا جائے جہاں وبائی مرض نے تباہی پھیلا رکھی ہے۔

ادھر وفاقی وزیر اسد عمر نے کرونا وائرس کے خلاف جنگ میں وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی کوششوں کو سراہتے ہوئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام میں لکھا ہے کہ “پاکستان نے اپنے 3 کروڑ شہریوں کو ویکسینیٹ کرنے کا سنگ میل حاصل کرلیا ہے۔ پہلے کروڑ کا ہندسہ حاصل کرنے میں 113 دن لگے، دوسرا ہندسہ 28 دنوں میں حاصل کیا گیا جبکہ تیسرا سنگ میل 16 دنوں میں عبور کیا گیا۔ کرونا کے خلاف جنگ میں تیزی آرہی ہے۔ ایک ہفتے قبل 9 لاکھ 34 ہزار لوگوں کو ویکسین لگائی گئی جبکہ گزشتہ 6 روز میں 50 لاکھ لوگ کو ویکسینیشن کی خوراک دی گئی۔

Facebook Comments Box