نواز شریف کی ویزا درخواست کس نے مسترد کروائی؟

نیوز 360 کے اینکر پرسن عرفان حیدر نے پروگرام میں اہم انکشافات کیے ہیں۔

نواز شریف کے ویزا میں توسیع کی درخواست مسترد ہونے کے بعد نظرثانی کی درخواست جمع کروادی گئی۔ نیوز 360 کے اینکر پرسن عرفان حیدر نے سابق وزیراعظم کی ویزا درخواست مسترد ہونے کے پیچھے محرکات کے حوالے سے اہم انکشافات کیے۔ 

نیوز 360 کے پروگرام ٹی آر پی 360 میں اینکر عرفان حیدر نے کہا کہ نواز شریف کو ملک سے باہر بھیجنے میں مولانا فضل الرحمان نے بڑا کردار ادا کیا تھا۔ مولانا فضل الرحمان نے اسلام آباد میں دھرنے کے دوران نواز شریف کو باہر بھجوانے کی شرط رکھی جس کے بعد انہیں 9 نومبر کو 4 ہفتوں کے لیے برطانیہ جانے کی اجازت ملی۔

پروگرام میں اینکر نے دعویٰ کیا کہ گرفتاریوں سے بچنے اور حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے اپوزیشن جماعتوں نے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے نام سے ایک الائنس بنایا جس کو مبینہ طور پر برطانیہ، امریکا اور عرب ممالک کی حمایت حاصل تھی۔

عرفان حیدر نے اپنے پروگرام میں کہا کہ پی ڈی ایم بنانے کا مقصد حکومت اور اسٹیبلشمنٹ کے درمیان کسی طرح دراڑیں پیدا کروانی تھیں لیکن اپوزیشن جماعتوں کے جلسوں میں نواز شریف اپوزیشن جماعتوں کے بجائے کسی اور ڈگر پر ہی چل پڑے اور نواز شریف نے ملکی اداروں کو ہی تنقید کا نشانہ بنانا شروع کردیا جس سے پی ڈی ایم کا پورا پلان ہی بگڑ گیا۔ جس کے بعد ملکی اداروں اور حکومت کے درمیان دراڑیں پڑنے کے بجائے قربتیں بڑھ گئیں، اسی بنیاد پر پیپلزپارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی نے پی ڈی ایم سے علیحدگی اختیار کرلی۔

یہ بھی پڑھیے

میاں نواز شریف کے لیے ایک طرف پہاڑ دوسری طرف کھائی

اینکر پرسن نے مزید کہا کہ نوازشریف کی تقریر کے باعث پی ڈی ایم بنانے والے سخت ناراض ہوئے اور ان کا عمران خان کی حکومت اور اداروں کے درمیان اختلاف والا پلان بھی فیل ہوگیا۔ نواز شریف کی ویزا درخواست بھی اسی وجہ سے مسترد ہوئی۔

عرفان حیدر کے مطابق اب بیرونی طاقتوں کے قریب نوازشریف کی کوئی اہمیت نہیں رہی اور وہ نواز شریف سے کسی قسم کا کام نہیں لینا چاہتے، اسی بنا پر سابق وزیراعظم کی برطانیہ میں ویزا میں توسیع کی درخواست مسترد کی گئی۔

Facebook Comments Box