مٹی سے زیوارت بنانے والی موہن جودڑو کی لڑکی

ثمرین سولنگی دریائے سندھ کے کنارے موجود ایک گاؤں حاجی لال بخش شیخ کی رہائشی ہے، یہ ہنرمند لڑکی چکنی مٹی سے موہن جودڑو سے ملنے والی مختلف اشیاء سے  ملتی جلتی چیزیں اور زیورات بناتی ہے۔

ثمرین کو یہ فن اپنے والد اور دیگر رشتے داروں سے ورثے میں ملا ہے۔ نیوز  360 سے  گفتگو  میں  ثمرین  نے  بتایا  کہ مٹی کی یہ اشیاء بنانے  کے  لیے  ایک  خاص  قسم  کی  چکنی  مٹی  درکار  ہوتی  ہے۔ ثمرین سولنگی اور اس کے گھر والے کرونا کے باعث علاقے میں ختم ہوتے سیاحتی مواقعوں سے پریشان تھے کیونکہ اس وجہ سے ان کے تیار کردہ زیورات و مٹی کی دیگر اشیاء فروخت  ہونا بند ہوگئی تھیں۔ لیکن ایسے میں سوشل میڈیا  ثمرین کے کام آیا۔

مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر  جب  اس  کا  کام سامنے آیا تو اسے پسند کیا گیا۔ اب ثمرین اور اس کے اہلخانہ سوشل میڈیا سے ہی اپنے آرڈر حاصل کرتے ہیں اور یوں گھر کا خرچ اور ثمرین کی شہرت دونوں ساتھ ساتھ چل رہے ہیں۔

یہ  بھی  پڑھیے

کراچی میں خواجہ سراؤں کی ویکسینیشن کا احسن اقدام

Facebook Comments Box