نصرت سحر عباسی حجابی کیوں ہوگئیں؟

نصرت سحر کا کہنا ہے کہ وہ اپنی سیاسی جماعت کا حصہ ہیں اور رہیں گی۔

رکن سندھ اسمبلی جی ڈی اے نصرت سحر عباسی نے حجاب لینا شروع کردیا، انہوں نے کہا ہے کہ اب سے وہ پردے میں رہتے ہوئے حق اور سچ کے لیے اسمبلی میں اپنی آواز بلند کرتی رہیں گی۔

کہتے ہیں بیماری انسان کو خدا سے قریب کردیتی ہے۔ نصرت سحر عباسی کے ساتھ بھی شاید کچھ ایسا ہی ہوا ہے۔ کرونا وبا کا شکار ہونے والی رکن سندھ اسمبلی نصرت سحر عباسی نے صحتیابی کے بعد حجاب لینا شروع کردیا ہے۔ سوشل میڈیا پر جاری ویڈیو پیغام میں نصرت سحر عباسی نے کہا کہ خدا کسی بھی وقت انسان کو ہدایت دے سکتا ہے، اس نے عورت کا پردے میں رہنا لازمی قرار دیا ہے اس لیے وہ اب سے پردے میں ہی رہیں گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان کی آواز ہی ان کی پہچان ہے لہذا لوگ اب انہیں اسمبلی میں ان کی آواز سے ہی پہچانیں گے۔ رکن سندھ اسمبلی کا مزید کہنا تھا کہ لوگ ان سے سوال کرتے ہیں کہ اچانک پردہ کیوں کیا؟ جس پر وہ انہیں بتانا چاہتی ہیں کہ یہ ان کے لیے مشکل تھا لیکن جب انسان کی نیت صاف ہو تو خدا مشکل کو آسان کردیتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

پنجاب کے اسسٹنٹ کمشنرز کی کارکردگی رینکنگ جاری

نصرت سحر نے کہا کہ وہ اسمبلی میں اسی طرح اپنا کردار ادا کرتی رہیں گی جس طرح کرتی آئی ہیں۔ وہ ہمیشہ حق اور سچ کے لیے آواز اٹھاتی رہیں گی۔ اپنی پارٹی کے حوالے سے نصرت سحر کا کہنا تھا کہ وہ اپنی سیاسی جماعت کا حصہ ہیں اور مستقبل میں بھی رہیں گی۔ نصرت سحر عباسی نے اپیل کی کہ پردے میں رہنے کے بعد ان کی کردار کشی بند کی جائے ہر کسی کی طرح ان کی بھی اپنی مرضی ہے۔

واضح رہے کہ نصرت سحر عباسی گذشتہ ماہ کرونا کا شکار ہوگئی تھیں۔ بیماری کے باعث وہ کئی دن اسپتال میں زیر علاج تھیں۔

Facebook Comments Box