وزیر دفاع پرویز خٹک کی اپنی ہی پولیس کو الٹا لٹکانے کی دھمکی

نوشہرہ جلسے میں اے کے 47 سے ہوائی فائرنگ بھی کی گئی جس سے کارکنان میں خوف و ہراس پھیل گیا۔

وزیر دفاع پرویز خٹک کی جانب سے نوشہرہ میں پی ٹی آئی کے جلسے میں کارکنوں کو آتش بازی کرنے کی ہدایت دینے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے۔ پرویز خٹک کا کہنا ہے کہ اگر کسی پولیس والے نے آتش بازی کرنے والوں کو تنگ کیا یا پرچہ کاٹا تو درخت کے الٹا لٹکا دوں گا۔

وزیر دفاع پرویز خٹک نے کارکنان کو آتش بازی کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کسی افسر یا پولیس والے کی پرواہ نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ آتش بازی پر پابندی ختم کرنے کا اعلان کرتا ہوں۔ کسی پولیس والے نے ہاتھ لگایا تو اسے بھگتنا پڑیگا۔

یہ بھی پڑھیے

ایف آئی اے نے ابصار عالم کے خلاف کیس ختم کردیا

پرویز خٹک نے سرکاری افسران کو کھلے عام دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ پولیس آتش بازی کرنے والوں کو نہ روکے ورنہ ضلع بدر کر دیا جائے گا۔ پولیس افسران کو جانے کی ہدایت کرتے ہوئے انہوں کہا کہ یہاں مت کھڑے رہیں ورنہ کل کو خفا ہوں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ رات وزیر دفاع پرویز خٹک نے اپنے حلقہ انتخاب میں جلسہ عام کیا تھا۔ جلسے کے اختتام پر پرجوش کارکنان کی جانب سے آتش بازی کی گئی جسے وہاں پر موجود پولیس افسران اور اہلکاروں نے رکوا دیا تھا۔

پولیس کے ایکشن کے بعد اسٹیج سے پرویز خٹک نے اعلان کیا کہ آتش بازی کیوں روکی گئی ہے۔ کسی افسر کی پرواہ نہ کریں میں یہاں موجود ہوں، کسی کی پرواہ نہ کریں۔

جلسے کے دوران اے کے 47 سے ہوائی فائرنگ بھی کی گئی جس سے کارکنان میں خوف و ہراس پھیل گیا، تاہم پرویز خٹک نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہوائی فائرنگ رکوا دی۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جلسے کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے سماجی کارکن اور یوتھ اسمبلی کے اسپیکر جلال شیرازی نے وزیر دفاع کی جانب سے دھمکیوں کو نوشہرہ پولیس اور انتظامیہ کے منہ پر طمانچہ قرار دیا ہے۔

Facebook Comments Box