چیئرمین نیب کی ریٹائرمنٹ، حکومت اور شریف فیملی آمنے سامنے

نیب لاہور نے نواز شریف سے 8 ملین پاؤنڈ کی ریکوری کے لیے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کیس میں کارروائی تیز کردی ہے۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کیس میں عدالت فیصلے کے تناظر میں جائیداد کی نیلامی کی کارروائی تیز کردی ہے، یہ سب کچھ اس وقت ہو رہا ہے جب نیب کے موجودہ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی مدت ملازمت میں توسیع کی بازگشت سنائی دے رہی ہے۔

نیب لاہور نے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کیس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف سے 8 ملین پاؤنڈ جرمانے کی ریکوری میں پیش رفت شروع کردی ہے۔ ایون فیلڈ کیس میں میاں نواز شریف کو 10 سال قید معہ 8 ملین پاؤنڈ کے جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی، جبکہ شریک ملزمان مریم نواز کو 7 سال قید اور 2 ملین پاؤند کی سزا سنائی تھی اور اسی طرح کیپٹن (ر) صفدر کو 1 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

ایم سی بی پر شریف فیملی کے لیے منی لانڈرنگ کا الزام

قومی احتساب بیورو (نیب) نے تیزی پکڑی ہے کیونکہ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی مدت ملازمت 8 اکتوبر کو ختم ہو رہی ہے، جبکہ مدت ملازمت میں توسیع کی بات چیت چل رہی ہے۔

چیئرمین نیب جاوید اقبال

چیئرمین نیب جاوید اقبال

گزشتہ روز مسلم لیگ (ن) کا ملتان ڈویژن کا ورکرز کنونشن ہوا۔ جس میں مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ سمیت دیگر رہنماؤں نے شرکت کی، حمزہ شہباز نے بھی ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا تھا کہ ہمیں بیانیے کے فرق کو مٹانا ہوگا، اور نہ ہمیں بیانیے کے تضاد کا شکار ہونا ہے۔ اگلا الیکشن ہمارا ہے اس کے لیے ہمیں متحد ہوکر انتخابات میں حصہ لینا ہے۔ اگر ہمارا بیانیہ ہمارا پاس نہ ہوتا تو ہم میں اور دوسری جماعتوں میں فرق نہ ہوتا۔

مریم نواز کا کہنا تھا آج سارے ملک میں "ووٹ کو عزت دو” کا بیانیہ چل رہا ہے۔ موجودہ دور میں ہر ادارہ اپنی بقا کی جنگ لڑ رہا ہے۔ حکومتی کارکردگی کے پول کھل رہے ہیں اس لیے یہ لوگ الیکشن کمیشن پر حملہ آور ہورہے ہیں۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ کس طرح ان کے تینوں ادوار میں فوجی جرنیل ان کی حکومت کے خلاف سازشیں کرتے رہے اور ان کی حکومتوں کو ختم کرتے رہے۔

دوسری جانب قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ حکومت کو نواز شریف کی چوری کے سوا کچھ دکھائی نہیں دیتا۔ حکومت نے ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ کیا تھا کہاں گئیں وہ نوکریاں؟ الٹا 50 لاکھ لوگوں کو بے روزگار کردیا ہے۔

اس موقع پر وفاقی وزیر شیریں مزاری نے شہباز شریف پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ ” آپ لوگوں کو مہنگائی اور بے روزگاری کے حوالے سے بات کرتے ہوئے شرم آنی چاہیے، نواز شریف اربوں روپے لوٹ کر ملک سےفرار ہو گیا۔

Facebook Comments Box