وفاقی وزارتوں کی خالی آسامیاں ویب سائٹ پر مشتہر ہونگی، فیصل جاوید

امیدوار آن لائن ہی ملازمتوں کے لیے درخواست جمع کرواسکیں گے، کوائف کی پڑتال کے بعد سسٹم درخواست کو آگے بھیجنے یا روکنے کا فیصلہ کرے گا۔

گزشتہ روز سینیٹ میں ایک قرارداد پیش کی گئی ہے کہ وفاقی وزارتیں اور ان سے منسلک محکمے آن لائن جاب پورٹلز تخلیق کریں۔ یہ بات سینیٹر فیصل جاوید خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے بتائی ہے۔

سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ انہوں نے سینیٹ میں یہ قرارداد پیش کی ہے تاکہ وفاقی وزارتوں اور ان کے ذیلی محکموں میں میرٹ کی بنیاد پر بھرتیاں ہوسکیں۔

یہ بھی پڑھیے

اے کے ڈی سکیورٹیز اور اوانزا سولیوشنز کے درمیان معاہدہ

انہوں نے مزید کہا کہ اس طریقہ کار کو اپنانے سے شفافیت کو یقینی بنایا جاسکے گا اور اقرباپروری، رشوت ستانی سے نجات ملے گی جن کی وجہ سے ہمارا سسٹم داؤ پر لگا ہوا ہے۔

سینیٹر فیصل جاوید خان کے ان ٹویٹس کے بعد کئی ٹوئٹر صارفین نے اس اقدام کو سراہا جبکہ کچھ ایسے بھی تھے جنہوں نے سینیٹر کو اپنی تجاویز اور تحفظات سے آگاہ کیا۔

ایک ٹوئٹر صارف محمود نے لکھا کہ 5 ہزار سے زیادہ پی ایچ ڈی کرنے والے افراد ملازمتیں تلاش کررہے ہیں، یہ حکومت تعلیم یافتہ افراد کے لیے بری ثابت ہوئی۔

ٹوئٹر یوزر شہزاد علی نے لکھا کہ یہ کام صوبائی سطح پر بھی کیا جانا چاہیے۔

وزیراعظم عمران خان نے اقتدار میں آنے سے قبل ہی سسٹم کو تبدیل کرنے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

اس ضمن میں تین برس کے دوران سول سروس ریفارمز پر کام جاری ہے جس میں اصلاحات لا کر اسے نافذ کیا جائے گا۔

اب سینیٹر فیصل جاوید خان کے مطابق اگر ان کی پیش کی گئی قرارداد پاس ہوجاتی ہے تو وفاقی وزارتوں اور ان کے محکموں میں موجود خالی آسامیوں کی تفصیلات ان کی آفیشل ویب سائٹ پر دستیاب ہوں گی۔

امیدواران آن لائن ہی ان ملازمتوں کے لیے درخواست جمع کرواسکیں گے اور evaluation system امیدوار کی تعلیمی قابلیت اور دیگر کوائف کی پڑتال کے بعد اسی وقت یہ فیصلہ کرے گا کہ امیدوار کی درخواست منظور کرنی ہے یا نہیں۔

اس طرح ملازمت کے لیے ٹیسٹ میں صرف موزوں امیدوار ہی شامل ہوں گے جبکہ باقی افراد کو آن لائن سسٹم فلٹر کردے گا۔

Facebook Comments Box