منی لانڈرنگ کیس شروع ہوتے ہی شہباز شریف پھسل گئے

منی لانڈرنگ کیس میں آج شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز پر فرد جرم عائد کردی گئی ہے۔

مسلم لیگ (ن) کی مرکزی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ پارٹی صدر شہباز شریف گھر میں سیڑیوں سے گر گئے ہیں جس کی وجہ سے ان کی کمر پر شدید موچ آئی ہے۔

مریم اورنگزیب کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ڈاکٹرز نے شہباز شریف کو مکمل آرام کا مشورہ ہے جس کے بعد انہوں نے اپنی سیاسی سرگرمیاں معطل کردی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

فواد چوہدری نے پی ٹی وی کو بھی خسارے سے نکال لیا

تاہم اس ساری صورتحال کو سیاسی تجزیہ کار کوئی اور رنگ دے رہے ہیں جو ایک لحاظ سے درست بھی لگتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایف آئی اے نے دو روز قبل جعلی اکاؤنٹ کیس میں شہباز شریف کو نوٹس جاری کیا تھا جس میں ان سے 25 ارب روپے کی ٹرانزیکشنز سے متعلق سوالنامہ بھیجا گیا تھا۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ کیسا کنکشن ہے کہ دو روز پہلے شہباز شریف کو نوٹس بھیجا جاتا ہے اور ایک روز بعد ان کو چوٹ لگ جاتی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو جیل میں  ڈالا جاتا ہے تو ان کو ڈینگی ہو جاتا ہے اور ان کے پلیٹلیٹس کم ہوجاتے ہیں ان کو دل کا بھی پرابلم ہو جاتا ہے مگر جیسے ہی لندن جاتے ہیں یہ لوگ بالکل تندرست ہو جاتے ہیں۔ لندن کی سڑکوں پر بھاگتے دوڑتے نظر آتے ہیں۔ ہوٹلنگ کرتے دکھائی دیتے ہیں۔

دوسری جانب منی لانڈرنگ کیس میں آج مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز پر فرد جرم عائد کردی گئی ہے۔

لاہور کی دو احتساب عدالتوں نے تین مقدمات کی سماعت ہوئی ہے۔ حمزہ شہباز رمضان شوگر ملز اور منی لانڈرنگ کے ریفرنسز میں پیش ہوئے۔ جبکہ شہباز شریف کے خلاف تینوں مقدمات میں حاضری معافی کی درخواست پیش کی گئی جسے عدالت نے منظور کرلیا ۔

عدالتوں نے تینوں مقدمات میں استغاثہ کے گواہان کو طلب کرتے ہوئے سماعت 18 اکتوبر تک ملتوی کردی۔

منی لانڈرنگ ریفرنس میں عدالت نے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز پر پلیڈر کے ذریعے فرد جرم کردی ہے۔ صحت جرم سے انکار پر عدالت نے استغاثہ کو گواہان پیش کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

Facebook Comments Box