پی ٹی آئی کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس، عمران خان کا وزارت عظمیٰ چھوڑنے کا عندیہ

ذرائع کے مطابق پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پرویز خٹک کو جواب دیتے ہوئے وزیراعظم کا کہا اگر آپ کی بلیک میلنگ جاری رہی تو حکومت اپوزیشن کو دے دوں گا۔

منی بجٹ کی منظوری کے موقع پرحکومتی جماعت میں پھوٹ پڑگئی، وزیراعظم عمران خان اور وزیر دفاع پرویز خٹک پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کے دوران آپس میں الجھ پڑے۔ پاکستان تحریک انصاف کے بعض وزراء کی جانب سے منی بجٹ اور نئی قانون سازی پر تحفظات کا بھی اظہار کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں وزیر دفاع پرویز خٹک اور  وزیراعظم کےدرمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا ہے۔ یہ اجلاس منی بجٹ کی منظوری کے حوالے سے پی ٹی آئی ارکان کی حمایت حاصل کرنے کے لیے بلایا گیا تھا، جس کی منظوری کے لیے حکومت کئی روز سے کوشاں ہے۔

یہ بھی پڑھیے

وائی ڈی اے سندھ اور بلوچستان کو صوبائی حکومتوں کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ

کالعدم ٹی ٹی پی نے خالد بلتی کی ہلاکت کی تصدیق کردی

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں ضمنی مالیاتی بل کی منظوی کے حوالے سے پارلیمانی پارٹی کےاجلاس میں ماحول کشیدہ دکھائی دیا، پرویز خٹک، نور عالم و دیگر ارکان کی جانب سے منی بجٹ، مہنگائی، اسٹیٹ بینک کی خودمختاری سے متعلق شدید اعتراض سامنے آئے۔

ذرائع کے مطابق وزیر دفاع اور سابق وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا کہ آپ کو وزیراعظم ہم نے بنوایا ہے، خیبرپختونخوا گیس اور بجلی پیدا کرتا ہے اور ہمارے ہی صوبے پر اس حوالے سے پابندی عائد کی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر وزیراعظم کا یہی رویہ رہا تو وہ ووٹ نہیں دے سکیں گے۔

ذرائع نے دعویٰ کیا کہ پرویز خٹک کی اس گفتگو  پر وزیراعظم نے برہمی کا اظہار کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے وزیر دفاع کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ مجھے بلیک میل نہیں کرسکتے ۔ اگر آپ مجھ سے مطمئن نہیں تو میں حکومت اپوزیشن کو دے کے الگ ہو جاتا ہوں ۔ آپ مجھے سب کے سامنے بلیک میل کررہے ہیں۔ میں روز روز آپ کو بلا کر ووٹ مانگ رہا ہوں۔

قومی اسمبلی میں مِنی بجٹ کی منظوری کے موقع پر درپیش مشکل صورتحال سے نمٹنے کے لیے وزیراعظم عمران خان آج خود پارلیمنٹ ہاؤس آئے اور قومی اسمبلی اجلاس سے پہلے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کی صدارت کی اور اپنی پارٹی کے ارکان کے تحفظات دور کرنے کی کوشش کی۔

ذرائع کے دعوے کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سے دیئے گئے عشائیے میں پنجاب سے تعلق رکھنے والے دو درجن  سے زائد اراکین قومی اسمبلی شریک نہیں ہوئے اور اس صورتحال سے وزیراعظم عمران خان کو آگاہ کردیا گیا ہے۔

Facebook Comments Box