فیٹف کے پاکستان سے مزید مطالبات ، گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ

وزارت خزانہ نے بھی فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے فیصلے کے اعلامیے پر اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف کے اہداف کے حصول کے لیے تمام ضروری اقدامات کرے گا۔

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کا فیصلہ آگیا، فیٹف پاکستان کی کارکردگی سے  مطمئن تاہم منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کو سزائیں دلوانا ہوں گی، اُس وقت تک پاکستان گرے لسٹ میں رہے گا،پاکستان باقی ایکشن پر بھی عمل درآمد کے لیے پرعزم ہے۔ دوسری جانب فیٹف نے متحدہ عرب امارات کو بھی منی لانڈرنگ کے بڑھتے ہوئے رجحان کو روکنے کے لیے گرے لسٹ پر منتقل کردیا ہے۔

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی سالانہ پلینری اجلاس 4 دن جاری رہنے کے بعد پیرس میں اختتام پزیر ہو گیا۔ جس  کے اعلامیے کے مطابق پاکستان گرے لسٹ میں برقرار رہے گا۔

یہ بھی پڑھیے

پشاور، نماز جمعہ کے دوران مسجد میں خودکش دھماکہ، 57 افراد جاں بحق

ایمان مزاری اور محسن داوڑ کیخلاف غداری کے مقدمے کی خبر جھوٹی نکلی

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ گرے لسٹ سے باہر نکلنے کے لیے منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کے خلاف کیسز نمٹانا ہوں گے اور    دہشت گردوں کی فنڈنگ اور منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کو سزائیں دینا ہوں گی۔

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) نے پاکستان کی مجموعی کارکردگی کو سراہا۔ تاہم پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کے   سال 2021 میں جون  کے ایکشن پلان کی تکمیل کیلئے کام جاری رکھنے کی ہدایت جاری کی گئی ہیں۔

اس ایکشن پلان میں پاکستان نے 27 میں سے 26 اہداف حاصل کیے تھے۔ ایف اے ٹی ایف کے مطابق پاکستان نے کورونا کے باجود بھی تمام ایکشن پلان کے اہداف میں بڑی پیش رفت کی۔

پاکستان نے اقوام متحدہ  کی لائیڈ لائنز پر بھی عمل درآمد کیا اور اقوام متحدہ کے نامزدہ کردہ افراد اور تنظمیوں کو کلعدم قرار دیا۔   ایف اے ٹی ایف کے مطابق پاکستان نے منی لانڈرنگ اور دہشت گروں تک سرمایہ، جائیدادیں، زیورات، قیمتی دھاتیں، پتھر اور  پرائز بانڈز کی رسائی کو روکنے کے لیے قانونی سازی کو موثر بنایا۔

ایف اے ٹی ایف اعلامیہ کے مطابق پاکستان 27 نکاتی ایکشن پلان میں سے 26 پر پہلے ہی عمل مکمل کر چکا ہے ۔ اسی طرح   مزید 7 میں سے 6 آئٹمز پر عمل درآمد مکمل کیا گیا۔

وزارت خزانہ نے بھی فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے فیصلے کے اعلامیہ جاری کیا ہے اور اس اعلامیے میں پاکستان نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف کے اہداف کے حصول کے لیے تمام ضروری اقدامات کرے گا۔  پاکستان اس سلسلے میں بروقت ان ایکشن پلان پر بھی عمل درآمد کرے گا جس کی نشان دہی کی گئی ہے۔

متعلقہ تحاریر