سلیکٹڈ راج قائم کرنے کے لیے پیپلز پارٹی کے خلاف سازش کی گئی، بلاول بھٹو زرداری

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا ہے ہم نے پرامن لانگ مارچ کے ذریعے سلیکٹڈ کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کا اعلان کیا تھا اور پھر اس وعدے کو پورا بھی کردکھایا۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین اور وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی گذشتہ 55 سالوں سے عوام کی خدمت کررہی ہے، شہید ذوالفقار علی بھٹو نے ایک ہارے ہوئے ملک کو امید دلائی ، بھٹو نے پاکستان کو اپنے پاؤں پر کھڑا کیا۔ پیپلز پارٹی نے ملک کو متفقہ دستور دیا۔

کراچی کے نشتر پارک میں پیپلز پارٹی کے 55ویں یوم تاسیس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا پاکستان پیپلز پارٹی یکجہتی اور بھائی چارے کی پارٹی ہے ، پیپلز پارٹی نفرت کی بجائے عوام کی خدمت پر یقین رکھتی ہے ، ہم نے آمریت کا مقابلہ کرکے جمہوریت کو مضبوط کیا۔

یہ بھی پڑھیے

ڈاکٹر یاسمین راشد کا مولانا فضل الرحمان کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا اعلان

جنرل (ر) قمر جاوید باجوہ کے جاتے ہی سینیٹر اعظم تارڑ کی وزارت قانون میں واپسی

وزیر خارجہ کا کہنا تھا بھٹو اپنی خارجہ پالیسی سے 90 ہزار قیدیوں کو وطن واپس لائے. اپنے خطاب میں بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا ہم نے ہمیشہ عوام کی خدمت کی ہے اور کرتے رہیں گے ، ہم نے خدمت کی سیاست کی ہے ، اگر کسی نے سیاست سیکھنی ہے تو محترمہ بے نظیر بھٹو سے سکھیے ، کیونکہ پیپلز پارٹی ملک کو جوڑتی ہے ، پیپلز پارٹی چاروں صوبوں کی زنجیر ہے ، جئے بھٹو کا نعرہ لگاتے ہوئے ہم نے تین آمروں کا بھگایا۔ ذوالفقار علی بھٹو نے ملک کے دفاع کو یقینی بنایا۔ پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کا کارنامہ پیپلز پارٹی کو جاتا ہے ، شہید ذوالفقار علی بھٹو نفرت کی سیاست پر نہیں چلتے تھے۔

ان کا کہنا ہے کراچی کا اگلاء میئر پیپلز پارٹی کا ایک جیالا ہوگا۔ عوام کا جوش دیکھ کر لگتا ہے کہ کراچی کا ناظم بھی جیالا ہی ہوگا۔ ہمارا حق ہے کہ ہم کراچی کا میئر منتخب کرائیں اور عوام کی خدمت کریں۔ پیپلز پارٹی انتشار کی سیاست کو رد کرتی ہے.

عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا ہم نے آئینی طریقے سے ایک سلیکٹڈ کا اقتدار ختم کیا۔ گلگت بلتستان میں جیالوں نے نیازی کی حالت غیر کردی ہے۔ ہم نے ضیاء الحق کی آمریت اور سلیکٹڈ راج کی سیاست ختم کردی ہے ، ہم ذوالفقار علی بھٹو جیسا لیڈر چاہیے تو ملک کی  خاطر شہادت کو قبول کرے ، بےنظیر کے والد اور دو بھائیوں کو شہید کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا پاکستان کو دنیا میں اپنا کھویا ہوا وقار واپس حاصل کرنا ہے ، پیپلز پارٹی اپنے ملک کے لیے سیاست کرتی ہے ، آصف علی زرداری نے 12 سال جیل کاٹی۔ پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں ایک بھی سیاسی قیدی نہیں تھا ، ملک کو جوڑنے کی سیاست کرتے ہوئے آمر مشرف کو گھر بھیجا۔ ہم نے کہا جمہوریت ہمارا بہترین انتقام ہے ، محترمہ کی شہادت کے وقت آصف زرداری اور جیالوں کے لیے مشکل وقت تھا ، مگر آصف علی زرداری نے پاکستان کھپے کا نعرہ لگایا۔ کیونکہ ہم اتحاد اور یکجہتی کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا کہنا تھا ہم نے پرامن لانگ مارچ کرکے عدم اعتماد کی تحریک لانے کا اعلان کیا ، وعدہ کیا تھا عدم اعتماد کو ہتھیار بنا کر سلیکٹڈ وزیراعظم  کو گھر بھیجیں گے ، اور ہم نے بھیج دیا ، ہم نے سلیکٹڈ راج کا جمہوری طریقے سے مقابلہ کیا ، بندوق کی نوک پر ہمارے لوگوں کو پارٹی سے نکالا گیا ، پیپلز پارٹی کو ایک صوبے تک محدود رکھنے کی کوشش کی گئی ، سلیکٹڈ راج قائم کرنے کے لیے پیپلز پارٹی کے خلاف سازش کی گئی۔

متعلقہ تحاریر