مہنگائی میں خوفناک اضافہ، پیٹرول 52، تعمیراتی سامان31، علاج معالجہ 20 فیصد مہنگا ہوگیا

ملک میں سالانہ مہنگائی کی شرح نے عوام کی زندگی اجیرن کرکے  تباہی مچادی ہے، پاکستان شماریات بیورو (پی بی ایس ) کے مطابق  گزشتہ سال نومبر کے مقابلے میں ملک میں 26 فیصد مہنگائی بڑھی ہے ، اشیائے خور و نوش عوام کی پہنچ سے باہر ہوتے جارہی ہے ، عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ اعداد و شمار غلط بتائیں جارہے ہیں  مہنگائی 50 فیصد سے زیادہ بڑھی ہے

ملک میں سالانہ مہنگائی کی شرح نےعوام کی زندگی اجیرن کرکے تباہی مچادی ہے۔ گزشتہ سال نومبر2021 کی نسبت پیٹرول52 فیصد، تعمیراتی سامان31 جبکہ صحت سے متعلق سہولیات 20 فیصد مہنگی ہوگئیں ہیں۔

وفاقی حکومت کے ادارے پاکستان شماریات بیورو (پی بی ایس )نے گزشتہ ماہ نومبر کے میں مہنگائی کی شرح اور اعداد و شمار جاری کیے جن کے مطابق گزشتہ سال نومبر 2021 کی نسبت  پیٹرول 52 فیصد،تعمیراتی سامان 31  جبکہ علاج معالجہ 20 فیصد مہنگا ہوگیاہے ۔

یہ بھی پڑھیے

حکومت کا مہنگائی کے ہاتھوں ستائے عوام پر گیس حملہ، ایل پی جی مزید مہنگی

نومبر میں سالانہ بنیاد پر دال مونگ 46.29 اور گندم 43.4 فیصد مہنگی ہوئی۔  نومبر 2021 کی نسبت نومبر 2022 میں خوردنی تیل 41.88 اور دال مسور 38.72 فیصد مہنگی ہوئی۔ اس دوران چاول 39 اور سرسوں کا تیل 44.6 فیصد مہنگا ہوا۔

پاکستان شماریات بیورو کے مطابق نومبر 2022 میں نومبر2021 کی نسبت صابن اور مارچ  43 فیصد اور تعمیراتی سامان 31 فیصد مہنگا ہوا۔ اس دوران سبزیاں اور پھل مجموعی طور پر 43 فیصد، کپڑے 18 اور جوتے 17 فیصد مہنگے ہوئے۔

پی بی ایس  کے مطابق ایک سال کے دوران تعلیم، بچوں کی فیس میں 11 فیصد جبکہ اسٹیشنری میں 44 فیصد اضافہ ہوا۔ مہنگائی نے علاج معالجہ بھی مہنگا کیا۔ ڈاکٹروں کی فیس میں 17 فیصد اور طبی ٹیسٹ بھی  17 سے  20 فیصد مہنگے ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے سےساڑھے 7 ارب روپے کا نقصان ہوگا ، او سی اے سی

عوام کا کہنا ہے کہ مارچ 2022 میں عوام کو ریلیف دینے کے لیے مہنگائی مارچ نکالنے والی حکمراں سیاسی جماعتیں انہیں ریلیف دینے بالکل ناکام ہوگئی ہیں۔مہنگائی کے اعداد و شمار بھی غلط بتائیں جار ہیں ۔

عوامی حلقوں کا کہناہے کہ ملک میں مہنگائی  26 کی بجائے 50 فیصد سے بھی زیادہ ہے۔ حکومت نے بجلی کا ریٹ 28 سے55 روپے یونٹ کردیا ہے، بجلی کے مہنگے ریٹ عوام کی قوت خرید  باہر ہوگئے ہیں ۔

متعلقہ تحاریر