پاکستان میں ایک کروڑ 46 لاکھ سیلاب متاثرین کو خوراک کی ضرورت ہے، آئی آر سی

سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 40 لاکھ بچے اب بھی آلودہ اور ٹھہرے ہوئے سیلابی پانی کے قریب اپنی بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں ، یونیسیف

انٹرنیشنل ریسکیو کمیٹی نے خبردارکیا ہےکہ پاکستان میں سیلاب سے متاثرہ ایک کروڑ 46 لاکھ افراد کو خوراک کی ضرورت ہے جبکہ 86 لاکھ افراد خوراک کی انتہائی کمی کا شکارہیں۔

دوسری جانب اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال (یونیسیف)  نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان کے سیلاب متاثرہ علاقوں میں 40 لاکھ بچے اب بھی بقاکی جنگ لڑرہےہیں۔

یہ بھی پڑھیے

جنیوا کانفرنس میں ملنے والی امداد سیلاب متاثرین پر خرچ کی جائے گی، دفتر خارجہ

جنیوا ڈونر کانفرنس: بلاول کا کئی علاقوں میں سیلابی پانی کھڑے رہنے کا اعتراف

پاکستان میں مہلک سیلاب کو چھ ماہ گزر چکے ہیں مگر اب بھی لاکھوں افراد غذائی قلت اور سیلاب سے لاحق مختلف بیماریوں کا شکار ہیں۔

انٹرنیشنل ریڈ کراس (آئی آر سی)  نے متنبہ کیا  ہے کہ اندازاًایک کروڑ 46 افراد کو خوراک کی امداد کی ضرورت ہے، جن میں86لاکھ افراد انتہائی سطح پر خوراک کی عدم تحفظ کا سامنا کر رہے ہیں اور ان سے نمٹنے، کھانا چھوڑنے اور اثاثے فروخت کرنے کے بارے میں ناممکن فیصلوں کا سامنا کر رہے ہیں۔

دوسری جانب اقوام متحدہ کے ادارہ برائے اطفال  (یونیسیف)  نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 40 لاکھ بچے اب بھی آلودہ اور ٹھہرے ہوئے سیلابی پانی کے قریب اپنی بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ گھروں کے تباہ ہونے کے بعد، وہ ایک کڑوی سردی کا شکار ہیں، کوئی معقول پناہ گاہ نہیں ہے۔

متعلقہ تحاریر