کفایت شعار کمیٹی کی سفارشات پر عملدرآمد کیلئے ایک اور 7 رکنی کمیٹی قائم

وفاقی حکومت کی جانب سے وزیراعظم  کی تشکیل کردہ 15 رکنی کفایت شعار کمیٹی کی سفارشات پر عملدرآمد  ایک اور سات رکنی کمیٹی قائم کردی گئی ہے، 7 رکنی کمیٹی 15 رکنی کمیٹی کی ایک ہزار ارب روپے کی سفارشات پر عملدرآمد یقینی بنائے گی

وفاقی حکومت نے وزیراعظم شہباز شریف کی تشکیل کردہ 15 رکنی کفایت شعار کمیٹی کی سفارشات پر عمل درآمد کرنے کیلئے ایک سات رکنی کمیٹی قائم کردی ہے ۔

وفاقی حکومت کی جانب سے وزیراعظم شہباز شریف  کی تشکیل کردہ 15 رکنی  کفایت شعار کمیٹی کی سفارشات پرکی ساتھ رکنی عمل در آمد کمیٹی قائم کردی ہے ۔

یہ بھی پڑھیے

کفایت شعاری کمیٹی رکن نے 200 ارب روپے کی بچت ناکافی قرار دے دی

وزیراعظم شہباز شریف نے 21 جنوری کو 15رکنی قومی کفایت شعاری کمیٹی تشکیل دی تھی  جس میں چاروں صوبائی چیف سیکرٹریز کو بھی شامل کیا گیا تھا ۔

ناصرکھوسہ اورعائشہ پاشا کی سربراہی میں  15 رکنی کمیٹی  کو سرکاری اخراجات میں کمی، سرکاری وسائل کی بچت کیلئے اقدامات تجویز مرتب کرنے کی مینڈیٹ دیا گیا۔

کمیٹی  نے ایک ہزار ارب روپے کی بچت کیلئے  سفارشات تیار کرکے وزیر اعظم شہباز شریف کو دی تھی  جس میں غیر جنگی دفاعی بجٹ میں 15 فیصد کٹوتی کی سفارش کی ۔

قومی کفایت شعاری کمیٹی نے سبسڈیز کی مد میں 200 ارب روپے، ترقیاتی اخراجات میں 200 ارب اور حکومتی اخراجات میں 55 ارب روپے کم کرنے کی سفارش کی ۔

کمیٹی نے صوابدیدی فنڈز میں 70 ارب روپے اور غیر جنگی دفاعی بجٹ میں 15 فیصد کٹوتی کی سفارش کی  جبکہ ترقیاتی اسکیموں سے 174 ارب روپے بچانے کی سفارش کی ۔

قومی کفایت شعاری کمیٹی کی سفارشات کے برعکس   وفاقی کابینہ نے  صرف  200 ارب روپے کی بچت  کے اقدامات اٹھانے کا اعلان کیا  گیا جسے ناکافی  قرار دیا گیا  ہے ۔

یہ بھی پڑھیے

قومی کفایت شعاری کمیٹی نے 1000 ارب روپے بچانے کا نسخہ دے دیا

کمیٹی کے رکن ڈاکٹر قیصر بنگالی نے کہا ہے کہ 200 ارب روپے کی بچت ناکافی ہے ،ریاست کو کم از کم ایک ہزار ارب روپے کے اخراجات گھٹانے کی ضرورت ہے ۔

اطلاعات کے مطابق وفاقی حکومت نے 15 رکنی کمیٹی کی ایک ہزار ارب روپے کی بچت کی سفارشات پر عم ل درآمد کے لیے  ایک سات رکنی کمیٹی قائم کردی ہے ۔

متعلقہ تحاریر