اسلام آباد کچہری میں قتل سے عمران خان کے خدشات درست ثابت ہوگئے

اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں زیر حراست ملزم کی فائرنگ سے ہلاکت پر احتشام الحق نے کہا کہ یہ حالت ہے اِسلام آباد کچہری کی۔ پولیس کے ہوتے ہوئے بندہ قتل ہوگیا، عمران خان کی بلٹ پروف شیلڈز میں عدالت آنے پر ینسنے والے دیکھ لیں

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد میں پولیس حراست میں ملزم  کی ہلاکت پر تحریک انصاف کے حامی صحافی احتشام الحق نے دعویٰ کیا ہے کہ عمران خان کے خدشات درست ثابت ہورہے ہیں۔

اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں زیر حراست ملزم کی فائرنگ سے ہلاکت پر احتشام الحق نے کہا کہ یہ حالت ہے اِسلام آباد کچہری کی۔ پولیس کے ہوتے ہوئے بندہ قتل ہوگیا۔

یہ بھی پڑھیے

رابرٹ ایف کینیڈی ہیومن رائٹس کا پاکستان میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر اظہار تشویش

احتشام نے لکھا کہ مخلافین عمران خان پر ہنستے ہیں کہ وہ بلٹ پروف شیلڈز کیساتھ عدالت میں کیوں پیش ہوتا ہے۔ یہ آپکا دارلحکومت ہے۔۔

یاد رہے کہ اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں قتل کے مقدمے میں نامزد ملزم زوار علی کو پیشی کے دوران وکلاء چیمبر کے قریب فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا ۔

عدالت میں پیشی کے بعد پولیس ملزمان کو واپس لا جا رہی تھی کہ اچانک سامنے سے مسلح شخص سلمان نے اندھا دھند فارئنگ کی جس سے زوار علی نامی شخص جاں بحق ہوگیا۔

پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے مسلح شخص سلمان کو حراست میں لے لیا جبکہ جاں بحق زوار علی کی میت قانونی کارروائی کے لیے اسپتال منتقل کی گئی ۔

اسلام آباڈ پولیس حکام کے مطابق قتل و مقتول آپس میں رشتے دار تھے، دونوں کا تعلق چار سدہ سے تھا، ملزم سلمان نے ذاتی رنجش پر زوار کو قتل کیا۔

آئی جی اسلام آباد ڈاکٹر اکبر ناصر خاں نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی پی او سیکیورٹی کو واقعے کی انکوائری کرکے رپورٹ دینے کا حکم دیا۔

متعلقہ تحاریر